اسرائیل۔ فلسطین کے بیچ قیام امن کے لئے ہزاروں خواتین کا مارچ

Oct 09, 2017 03:08 PM IST | Updated on: Oct 09, 2017 03:08 PM IST

یوروشلم۔ قیام امن کی کوششوں کے تحت ہزاروں اسرائیلی اور فلسطینی خواتین نے یہاں اتوار کے روز امن مارچ نکالا۔ صحرا کے راستہ سے گزرنے والا یہ مارچ دریائے اردن کے ساحلوں پر پہنچا۔ یہ خواتین دریائے اردن کے ساحلوں پر جمع ہوئیں اور یہاں انہوں نے ہاجرہ اور سارہ نامی ایک امن خیمہ قائم کیا۔ ان خواتین میں زیادہ تر خواتین سفید لباس میں ملبوس تھیں۔ مارچ کا اہتمام کرنے والی تنظیم وومن ویج پیس کی ایک بانی میری لن سمدجا نے کہا کہ ہم مختلف نظریات کی حامل خواتین ہیں۔ ہم دائیں بازو، بائیں بازو، یہودیوں اور عربوں کی خواتین ہیں، ہمارا تعلق ارد گرد کے شہروں سے ہے اور ہم نے فیصلہ کیا ہے کہ ہم اگلی جنگ کو روکیں گے۔

یہ تنظیم 2014میں 50 دن تک جاری رہنے والی غزہ کی جنگ کے بعد قائم کی گئی تھی جس میں 2100 فلسطینی مارے گئے تھے۔ مارے گئے لوگوں میں زیادہ تر شہری تھے۔ جبکہ اسرائیل کے 67 فوجی اور 6شہری مارے گئے تھے۔

اسرائیل۔ فلسطین کے بیچ قیام امن کے لئے ہزاروں خواتین کا مارچ

مقبوضہ مغربی کنارہ میں دریائے اردن کے پاس نصب امن خیمہ کے اندر فلسطینی اور اسرائیلی خواتین جشن مناتے ہوئے۔ رائٹرز۔

منتظمین نے کہا کہ اتوار کو نکالے گئے مارچ میں تقریباً 5 ہزار خواتین نے شرکت کی۔ اس مارچ کا آغاز گزشتہ ماہ ہوا اور اس میں اسرائیل کے متعدد مقامات کا احاطہ کیا گیا اور بعد میں اسرائیل کے وزیر اعظم بنجامن نیتن یاہو کی یوروشلم رہائش گاہ کے باہر دن میں ایک ریلی کے اہتمام کے ساتھ اختتام پذیر ہو جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز