مسجد اقصیٰ کے تمام دروازے فلسطینیوں کے لئے کھول دئیے گئے، عمر کی حد کی شرط ختم

Jul 29, 2017 01:26 PM IST | Updated on: Jul 29, 2017 01:26 PM IST

مقبوضہ بیت المقدس۔  اسرائیل نے مسجد اقصیٰ کے تمام بند دروازے فلسطینیوں کے لیے کھول دیے ہیں اور ساتھ ہی فلسطینیوں کی مسجد میں آمد کے لیے مقرر کردہ عمر کی حد بھی ختم کردی ہے۔ فلسطینی محکمہ اوقاف نے جمعہ کے روز ایک بیان میں یہ اطلاع دی۔ ادھر دوسری جانب جمعہ کے روز بھی حرم قدسی میں فلسطینی نمازیوں اور اسرائیلی فورسز کے درمیان کشیدگی جاری رہی۔ اس دوران اسرائیلی فوج نے نمازیوں کے خلاف پر تشدد حربے استعمال کیے جس کے نتیجے میں پچاس سے زاید فلسطینی زخمی ہوگئے۔ ہلال احمر فلسطین کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ جمعہ کو اسرائیلی فوج نے غرب اردن اور القدس کے نمازیوں پر تشدد کیا جس کے نتیجے میں کم سے کم 52 فلسطینی زخمی ہوگئے۔

قبل ازیں اسرائیلی فوج نے مسجد اقصیٰ میں نماز جمعہ کی ادائیگی سے روکنے کے لیے فلسطینیوں پر نئی پابندیاں عاید کردی تھیں جس پر فلسطینی مشتعل ہوگئے اور انہوں نے اسرائیلی فورسز کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ محکمہ اوقاف کے مطابق جمعہ کو 10 ہزار فلسطینیوں نے حرم قدسی کے اندر جمعہ کی نماز ادا کی۔ ادھر مقبوضہ مغربی کنارے کے جنوبی شہر بیت لحم میں اسرائیلی فوج اور فلسطینی نوجوانوں کے درمیان ہونے والی جھڑپوں میں متعدد شہری زخمی ہوگئے۔ بیت لحم میں اسرائیلی فوج نے فلسطینی نمازیوں پر وحشیانہ تشدد کیا اور انہیں منشتر کرنے کے لیے ان پردھاتی گولیوں کی بوچھاڑکی گئی۔ آنسوگیس کی شیلنگ اور براہ راست فائرنگ سے بھی انہیں نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں متعدد شہری زخمی ہوگئے۔

مسجد اقصیٰ کے تمام دروازے فلسطینیوں کے لئے کھول دئیے گئے، عمر کی حد کی شرط ختم

ہزاروں فلسطینی جنہیں مسجد اقصیٰ میں داخل ہونے سے روک دیا گیا تھا، انہوں نے سڑکوں پر نماز ادا کی۔ تصویر: الجزیرہ ڈاٹ کام۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق، بیت المقدس میں قلندیا چیک پوسٹ کے قریب بھی فلسطینیوں اور اسرائیلی فوج کے درمیان جھڑپوں کی اطلاعات ہیں جہاں فلسطینیوں کو منشتر کرنے کے لیے ان پر طاقت کا استعمال کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز