دہشت گردانہ حملوں کے بعد بدلے سیاسی حالات کے بیچ برطانیہ میں عام انتخابات آج

Jun 08, 2017 10:24 AM IST | Updated on: Jun 08, 2017 10:24 AM IST

لندن۔  برطانیہ میں دہشت گردانہ حملوں کے بعد بدلے سیاسی حالات کے درمیان آج عام انتخابات ہوں گے۔ اس انتخاب میں تقریبا پانچ کروڑ ووٹر اپنے حق رائے دہی کااستعمال کریں گے۔ برطانیہ کی وزیر اعظم ٹریسا مے نے اپریل میں وسط مدتی انتخابات کا اعلان کیا تھا۔

محترمہ مے نے یورپی یونین سے نکلنے کے عمل میں مصروف برطانیہ میں استحکام لانے کے لئے یہ فیصلہ کیا تھا۔ اس وقت کنزرویٹو پارٹی نے اچھی برتری حاصل کی  تھی۔ اگرچہ دہشت گردانہ حملوں کے بعد سے برطانیہ میں سیاسی تبدیلی آئی ہے اور یہ انتخابات کا اہم موضوع بن گیا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ برطانیہ میں حالیہ وقت میں تین بڑے دہشت گردانہ حملہ ہو چکے ہیں۔

دہشت گردانہ حملوں کے بعد بدلے سیاسی حالات کے بیچ برطانیہ میں عام انتخابات آج

برطانیہ کی وزیر اعظم تھریسا مے انتخابی تشہیر کے دوران: تصویر، رائٹرز

ایک انتخابی سروے کے مطابق، کنزرویٹو پارٹی کو 41.6 فیصد اور اپوزیشن لیبر پارٹی کو 40.4 فیصد لوگوں کی حمایت حاصل نظر آ رہی ہے۔ شروع میں دونوں پارٹیوں کے درمیان 20 فیصد کا فرق تھا، جو اب کافی کم ہو گیا ہے۔ 650 ارکان والی برطانوی پارلیمنٹ میں فی الحال محترمہ مے کی پارٹی کے پاس اکثریت ہے۔ 2015 میں ہونے والے انتخابات میں ڈیوڈ کیمرون نے 331 سیٹیں جیتی تھیں۔ اکثریت کا جادوئی عدد 326 کا ہے۔ بہت سی ایجنسیاں اب بھی محترمہ مے کی شاندار جیت کا دعوی کر رہی ہیں۔ انتخابی مہم میں مصروف ٹریسا مے نے ووٹروں سے اپیل میں کہا، ’’ برطانیہ کی قیادت کرنے کے لئے میری حمایت کیجئے‘‘۔

واضح رہے کہ برطانیہ کے یورپی یونین سے نکلنے کا عمل 19 جون سے شروع ہوگا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز