خطبہ حج : اسلام میں مسلم اور غیر مسلم کسی کے ساتھ بھی زیادتی کی اجازت نہیں ، مسلم حکمراں قرآن کے مطابق حکمرانی کریں

Aug 31, 2017 06:27 PM IST | Updated on: Aug 31, 2017 06:33 PM IST

مکہ مکرمہ : حج کے سب سے اہم رکن وقوف عرفہ کے دوران میدان عرفات میں واقع مسجد نمرہ میں شیخ سعد بن ناصرالشتری نے خطبہ حج دیتے ہوئے کہا کہ تمام مسلمانوں پر لازم ہے شریعت کے احکامات پرپوری طرح عمل پیراہوں، زیادتی مسلمان کے ساتھ ہو یا غیر مسلم کے ساتھ اسلام میں منع ہے اور شریعت اسلامیہ نے والدین کی خدمت کا درس دیا۔  شیخ ڈاکٹر سعد بن ناصر الشتری نے کہا کہ مسلمانوں کے حکمرانوں کو چاہیے کہ اللہ کی کتاب قرآن کو مضبوطی سے تھامیں، اس پر عمل کریں اور اسکے مطابق حکمرانی کریں، اللہ کے راستے پر گامزن رہنے میں ہی راہ نجات ہے، دعا ہے کہ اللہ تعالیٰ مسجد اقصی مسلمانوں کو لوٹا دے۔

ڈاکٹر شیخ سعدبن ناصرالشثری نے کہا کہ شریعت اسلامیہ کی خوبصورتی ہے کہ زمین پر زندگی کومنظم کیا، اللہ نے قرآن میں اعلان کیا کہ حضوراکرم ﷺکو رحمت اللعالمین بنا کر بھیجا۔انہوں نے کہا کہ اسلام کی تعلیمات اچھے اخلاق کی بھی تعلیم دیتی ہیں، اللہ نے حضور اکرم ﷺکو رحمت اللعالمین بنا کر بھیجا، زکوٰۃ میں مال کا مخصوص حصہ فقرا کو صدقہ کرنا ہوتاہے، اللہ نے وعدہ کیا ہے کہ متقی بندے جنت میں داخل کیے جائیں گے، نصیحت کرتاہوں کہ تقویٰ اختیار کریں۔  انہوں نے کہا کہ تقویٰ کی بنیاد ہی توحید ہے، اللہ نے وعدہ کیا، متقی بندے جنت میں جائیں گے، توحید کا پیغام تمام انبیاء کی تعلیمات کا بنیادی رکن ہے، تمام تعریفیں اللہ کے لیے ہیں۔

خطبہ حج : اسلام میں مسلم اور غیر مسلم کسی کے ساتھ  بھی زیادتی کی اجازت نہیں ، مسلم حکمراں قرآن کے مطابق حکمرانی کریں

عرفات میں واقع مسجد النمرہ: فائل فوٹو۔

شیخ سعد بن ناصرالشتری نے خطبہ حج میں کہا کہ اسلام نے ہر قسم کے غبن اور سود کو حرام قرار دیا، والدین کی خدمت اور فرمانبرداری اولاد پرفرض ہے، شریعت اسلامیہ کی خوبصورتی ہے کہ زمین پر زندگی، مالی اور معاشی نظام کو منظم کیا، اسلام نے برائی اور فحاشی کو حرام قرار دیا، اللہ نے فرمایا ایک دوسرے کا مال ناحق نہ کھاؤ، ایمان لانے اور نیک عمل کرنیوالوں کو زمین پر طاقت عطا ہوگی، کسی کو رنگ اور نسل کے لحاظ سے ایک دوسرے پر فوقیت نہیں، اسلام نے مسلم اور غیر مسلم کیساتھ زیادتی سے منع فرمایا ہے۔ ہم پر لازم ہے شریعت کے احکامات پر پوری طرح عمل پیرا ہوں، مسلمان پر لازم ہے کہ ان حدود کی حفاظت کرے جو اللہ نے اس کیلئے کھینچ دیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز