شمالی کوریا سے جنگ: نیوکلیائی بم کے بغیر بھی لاکھوں افراد کی ہلاکت کا خدشہ

Oct 28, 2017 08:16 PM IST | Updated on: Oct 28, 2017 08:16 PM IST

سیول۔ امریکی کانگریس کے تھنک ٹینک كانگریسنل ریسرچ سروس کی ایک رپورٹ کے مطابق اگر شمالی کوریا سے جنگ چھڑتی ہے تو نیوکلیائی ہتھیاروں کے استعمال نہ ہونے کی صورت میں بھی لاکھوں افراد مارے جائیں گے۔ كانگریسنل ریسرچ سروس کی ایک رپورٹ کے حوالے سے بلوم برگ نے اس نقصان کا اندازہ لگاتے ہوئے کہا کہ صورتحال اتنی خوفناک ہو جائے گی کہ پہلے ہی دن تین لاکھ لوگ مارے جا سکتے ہیں۔ 62 صفحات پر مشتمل اس رپورٹ کو امریکی قانون سازوں کو بھیجی گئی ہے۔

اس رپورٹ کے مطابق، اگر جنگ چھڑی تو جزیرہ نما کوریا کی آبادی کی کثافت کے حساب سے 2.5 کروڑ سے زیادہ لوگ متاثر ہوں گے۔ ان میں تقریبا ایک لاکھ امریکی شہری بھی متاثر ہوں گے۔ غورطلب ہے کہ شمالی کوریا کے میزائل پروگراموں اور ایٹمی ہتھیاروں کی جانچ کے لئے پورے کورین جزیرے میں تناؤ ہے۔ امریکہ کی جانب سے بھی اسے مسلسل جارحانہ کارروائی کی دھمکی دی جا رہی ہے۔ شمالی کوریا بھی امریکہ سمیت پوری دنیا کو ایٹمی ہتھیار کا خوف دکھا رہا ہے۔ رپورٹ کے مطابق اگر شمالی کوریا اپنے روایتی ہتھیاروں کا ہی استعمال کرے تو پہلے دن ہی 30 ہزار سے تین لاکھ لوگ تک مارے جائیں گے۔

شمالی کوریا سے جنگ: نیوکلیائی بم کے بغیر بھی لاکھوں افراد کی ہلاکت کا خدشہ

شمالی کوریا کے لیڈر کم جونگ ان کی فائل فوٹو۔ رائٹرز۔

رپورٹ میں یہ خبر دی گئی ہے کہ شمالی کوریا کے پاس دس ہزار راؤنڈ فی سیکنڈ فائرنگ کرنے کی صلاحیت ہے۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ ایک بار جنگ کا اعلان ہونے کے بعد یہ تیزی سے پھیل کر چین، جاپان اور روس کی بھی فوجوں کو اس میں شامل کر سکتا ہے۔ امریکہ کے لئے یہ جنگ انتہائی نقصان دہ ثابت ہوسکتا ہے۔ اس کے مطابق جنگ لڑنے کے لئے کوریائی جزیرے میں امریکی فوج کی ایک بڑی تعداد شامل ہو گی۔ایسے حالات میں کافی زیادہ ملٹری نقصان کا بھی خدشہ ہے۔ ایسے بھی خدشات کا اظہار کیا گیا ہے کہ چین بھی اس تنازعہ میں کود پڑے گا اور یہ جنگ جزیرہ نما کوریا کے باہر تک پھیل جائے گی، جس سے نقصانات بہت زیادہ ہو ں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز