چین میں مسلمانوں کو قرآن کریم سمیت تمام مذہبی چیزیں جمع کرانے کا سرکاری فرمان

چین کے مسلمانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ نماز پڑھنے والی چٹائی اور قرآن پولیس کو سونپ دیں۔

Sep 30, 2017 10:40 AM IST | Updated on: Sep 30, 2017 10:40 AM IST

نئی دہلی۔ چین کی حکومت نے ملک میں مقیم مسلمانوں کے خلاف مبینہ طور پرسخت قدم اٹھانے شروع کر دئیے ہیں۔ چین کے مسلمانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ نماز پڑھنے والی چٹائی اور قرآن پولیس کو سونپ دیں۔ ڈیلی میل کی خبر کے مطابق، یہ وارننگ دی  گئی ہے کہ اگر چٹائی اور قرآن کی کاپیاں پائی گئیں تو سنگین سزا دی جائے گی۔ چینی افسران کا کہنا ہے کہ قرآن میں شدت پسندی کو فروغ دینے والی باتیں ہیں۔

چین کے شنجیانگ صوبے کے افسروں نے ایغور کمیونٹی کو خبردار کیا ہے کہ انہیں اپنی تمام مذہبی چیزیں دینی ہوں گی ورنہ کڑی سزا کے لئے انہیں تیار رہنا ہو گا۔ تاہم، چین کی خارجہ وزارت کے ترجمان کے مطابق، شنجیانگ میں قرآن کو ضبط کرنے کی اطلاعات بے بنیاد ہیں۔

چین میں مسلمانوں کو قرآن کریم سمیت تمام مذہبی چیزیں جمع کرانے کا سرکاری فرمان

چین کے شنجیانگ صوبے کے افسروں نے ایغور کمیونٹی کو خبردار کیا ہے کہ انہیں اپنی تمام مذہبی چیزیں دینی ہوں گی ورنہ کڑی سزا کے لئے انہیں تیار رہنا ہو گا۔

Loading...

اویغور کانگریس کے ایک جلاوطن رہنما نے امریکی حکومت کی جانب سے چلائے جا رہے ریڈیو فری ایشیا کو بتایا، "ہمیں ایک نوٹیفکیشن ملا ہے جس کے مطابق اویغور کمیونٹی کے تمام لوگوں کو اسلام سے متعلق ایک ایک چیز جیسے قرآن، نمازپڑھنے والی چٹائی، وغیرہ کو افسران کو سونپنا ہے۔ اگر ایسا نہیں کیا گیا تو پھر انہیں سخت سزا دی جائے گی۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز