سر پر لگی تیز گیند ، ٹوٹ گیا ہیلمٹ ، ڈاکٹروں نے بھی کیا منع ، پھر بھی اپنی ماں کیلئے کھیلتا رہا افغانستان کا یہ بلے باز– News18 Urdu

سر پر لگی تیز گیند ، ٹوٹ گیا ہیلمٹ ، ڈاکٹروں نے بھی کیا منع ، پھر بھی اپنی ماں کیلئے کھیلتا رہا افغانستان کا یہ بلے باز

افغانستان کے بلے باز حشمت اللہ شاہدی بلے بازی کررہے تھے کہ انگلینڈ کے تیز گیند مارک ووڈ کی گیند ان کے ہیلمٹ پر لگی ۔ گیند اتنی تیز تھی کہ شاہدی کا ہیلمٹ ٹوٹ گیا اور وہ زمین پر گر پڑے ۔

Jun 19, 2019 03:41 PM IST | Updated on: Jun 19, 2019 03:41 PM IST

کرکٹ کے میدان پر مقابلہ صرف گیند اور بلے کا ہی نہیں ہوتا ہے ، بلکہ کھلاڑی جذبات کو بھی قابو میں رکھتے ہوئے کھیلتے ہیں اور فاتح بن کر ابھرتے ہیں ۔ ورلڈ کپ 2019 میں انگلینڈ اور افغانستان کے درمیان کھیلے گئے میچ میں بھی ایسا ہی ایک نظارہ دیکھنے کو ملا ۔

منگل کو کھیلے گئے مقابلے میں انگلینڈ نے 150 رنوں سے بڑی جیت درج کی ۔ انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بازی کرتے ہوئے 6 وکٹ پر 397 رنوں کا ہمالیائی اسکور کھڑا کیا ، جس کے جواب میں افغانستان کی ٹیم 8 وکٹ کھوکر 247 رن ہی بنا سکی ۔ صرف 71 گیندوں میں ریکارڈ 148 رنوں کی اننگز کھیلنے والے انگلینڈ کے کپتان مورگن کو مین آف دی میچ قرار دیا گیا ۔

سر پر لگی تیز گیند ، ٹوٹ گیا ہیلمٹ ، ڈاکٹروں نے بھی کیا منع ، پھر بھی اپنی ماں کیلئے کھیلتا رہا افغانستان کا یہ بلے باز

ورلڈ کپ : سر پر لگی تیز گیند ، ٹوٹ گیا ہیلمٹ ، ڈاکٹروں نے بھی کیا منع ، پھر بھی اپنی ماں کیلئے کھیلتا رہا یہ بلے باز

Loading...

اس میچ کے دوران ایک دلچسپ واقعہ بھی دیکھنے کو ملا ۔ افغانستان کے بلے باز حشمت اللہ شاہدی بلے بازی کررہے تھے کہ انگلینڈ کے تیز گیند مارک ووڈ کی گیند ان کے ہیلمٹ پر لگی ۔ گیند اتنی تیز تھی کہ شاہدی کا ہیلمٹ ٹوٹ گیا اور وہ زمین پر گر پڑے ۔ مگر شاہدی فورا ہی کھڑے ہوگئے اور بلے بازی کیلئے تیار نظر آئے ۔

ہر کوئی حیران تھا کہ اتنی تیز گیند ہیلمٹ پر لگنے کے بعد بھی شاہدی فورا کھڑے ہوکر کھیلنے کیلئے کیسے تیار ہوگئے ۔ اب شاہدی نے خود اس کی وجہ بتائی ہے ۔ افغانستان کے اس بہادر بلے باز نے انسٹاگرام پر پوسٹ کرتے ہوئے لکھا کہ میری ماں ہر وقت میری فکر کرتی رہتی ہیں ، میں نے گزشتہ سال ہی اپنے والد کو کھودیا تھا ، اب میں والدہ کا دل نہیں دکھانا چاہتا تھا ، اس لئے گیند لگنے کے بعد فورا ہی کھڑا ہوگیا ۔

قابل ذکر ہے کہ گیند لگنے کے بعد ڈاکٹروں نے ان کی حالت پر تشویش کا بھی اظہار کیا تھا اور بلے بازی جاری نہیں رکھنے کا مشورہ دیا تھا ، مگر شاہدی نہیں مانے ۔ شاہدی نے بتایا کہ ڈاکٹر میرے پاس آئے ، میرا ہیلمٹ ٹوٹ چکا تھا ، انہوں نے مجھ سے کہا کہ میدان کے باہر چلو ، میں نے ان سے کہا کہ میں اس وقت اپنی ٹیم کو نہیں چھوڑ سکتا ، میرا پورا کنبہ یہ میچ دیکھ رہا ہے ، میرا بڑا بھائی اسٹیڈیم میں موجود ہے ، میں انہیں اپنے لئے فکرمند ہوتا نہیں دیکھنا چاہتا۔

Loading...