امریکی صدر ٹرمپ کا فین ہے نیوزی لینڈ کا مشتبہ حملہ آور ، گورے رنگ کو دیتا ہے توجہ

برٹش میڈیا کے مطابق ٹن ٹیرینٹ نام کے 28 سالہ نوجوان نے مسجد پر حملہ کیا تھا۔ وہ آسٹریلیا کا رہنے والا ہے ۔

Mar 15, 2019 02:40 PM IST | Updated on: Mar 15, 2019 02:55 PM IST

نیوزی لینڈ کے کرائسٹ چرچ کی النور مسجد میں جمعہ کو ایک بندوق بردار حملہ نے اندھادھند فائرنگ کرکے تقریبا 49 افراد کو موت کے گھات اتار دیا ۔ اس حملہ میں درجنوں افراد زخمی بھی ہوئے ہیں ۔ جس وقت یہ حملہ کیا گیا ، مسجد لوگوں سے بھری ہوئی تھی ۔ حملہ ہوتے ہی وہاں افرا تفری مچ گئی ۔

برٹش میڈیا کے مطابق ٹن ٹیرینٹ نام کے 28 سالہ نوجوان نے مسجد پر حملہ کیا تھا۔ وہ آسٹریلیا کا رہنے والا ہے ۔ حملہ آور نے اس حملہ سے پہلے ایک سنسنی خیز منشور "دی گریٹ ریپلیسمنٹ "لکھا تھا ۔ اس میں اس نے دہشت گردانہ حملوں میں یوروپی شہریوں کی جانیں تلف ہونے کا بدلہ لینے کی بات کہی ۔ اس کے ساتھ ہی اس نے وہائٹ سپریمیسی قائم کرنے کی بھی بات کہی ۔

امریکی صدر ٹرمپ کا فین ہے نیوزی لینڈ کا مشتبہ حملہ آور ، گورے رنگ کو دیتا ہے توجہ

برٹش اخبار "دی سن "کے مطابق حملہ آور امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کا فین ہے۔ وہ ٹرمپ کو گوروں کی نئی پہچان مانتا ہے۔

برٹش اخبار "دی سن "کے مطابق حملہ آور امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کا فین ہے۔ وہ ٹرمپ کو گوروں کی نئی پہچان مانتا ہے۔ ساتھ ہی حملہ آور کو وہائٹ سپریمیسی کا جنون بھی سوار ہے۔ حملہ کرنے سے پہلے اس نے لکھا "حملہ کرنے ولوں کو دکھانا ہے کہ ہماری زمین کبھی ان کی نہیں ہوگی ، جب تک ایک بھی گورا شخص رہےگا ، وہ کبھی جیت نہیں پائیں گے ـ"۔

Loading...

یہ بھی پڑھیں : نیوزی لینڈ : مسجد میں نماز ادا کرنے والے تھے بنگلہ دیش کے کرکٹرز ، اسی دوران شروع ہوگئی فائرنگ

اس میں حملہ آور نے خود عام گورا شخص بتایا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ اس کے والدین برٹش نزاد ہیں ۔ اس نے گورے لوگوں کی تعداد بڑھانے کی بات کہی ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ ہماری فرٹیلیٹی شرح کم ہے جبکہ کے باہر سے آئے لوگوں کی فرٹیلیٹی شرح زیادہ ہے ۔ ایک دن وہ گوروں سے ان کی زمین چھین لیں گے۔

یہ بھی پڑھیں : نیوزی لینڈ : دو مساجد میں گولہ باری سے دہل اٹھا پورا شہر ، لوگوں میں خوف و ہراس ، دیکھیں تصاویر

 

Loading...