یوروپی ممالک افغان مہاجرین کو جبراً نہ نکالیں: ایمنسٹی

کابل۔ ایمنسٹی انٹر نیشنل نے یوروپی ممالک سے اپیل کی ہے کہ وہ افغان مہاجرین کو جبراً ان کے ملک بھیجنا بند کریں کیونکہ دہشت گردی سے سنگین طور سے متاثر افغانستان ان کیلئے محفوظ نہیں ہے،تب ہی ان لوگوں نے اپنا گھر بار چھوڑ کر مہاجرت کی ہے۔

Oct 05, 2017 04:38 PM IST | Updated on: Oct 05, 2017 04:38 PM IST

کابل۔ ایمنسٹی انٹر نیشنل نے یوروپی ممالک سے اپیل کی ہے کہ وہ افغان مہاجرین کو جبراً ان کے ملک بھیجنا بند کریں کیونکہ دہشت گردی سے سنگین طور سے متاثر افغانستان ان کیلئے محفوظ نہیں ہے،تب ہی ان لوگوں نے اپنا گھر بار چھوڑ کر مہاجرت کی ہے۔ حقوق انسانی کی اس تنظیم نے جمعرات کو ایک رپورٹ جاری کر کے کہا کہ حال کے برسوں میں راجدھانی کابل سمیت پورے افغانستان میں دہشت گردی کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔

مقامی اور مہاجرین کے حقوق پر کام کرنے والی تنظیم ایمنسٹی انٹر نیشنل کی انا شیا نے کہا ’’ افغانستان میں طالبان لگاتار اپنا اثر بڑھا رہاہے۔اور آئے دن ملک میں خود کش حملے ہورہے ہیں۔ایسے حالات میں یوروپی ممالک کو ان کے ملک میں پناہ لینے والے لوگوں جبراً یا شاذ و نادربھیجنا بند کرنا چاہئے۔جب تک افغانستان میں حالات بہتر اور سلامتی کے نکتہ نظر سے محفوظ نہیں ہوجاتے ایک حقوق انساں ہونے کے ناطے انہیں ان کے ملک بھیجنے پر مجبور نہیں کیا جاسکتا یا ان کے ساتھ زبردستی نہیں کی جاسکتی‘‘۔

یوروپی ممالک افغان مہاجرین کو جبراً نہ نکالیں: ایمنسٹی

انہوں نے کہا کہ غیر ملکی امدادپر منحصر رہنے کے باوجود افغانستان کو یوروپی ممالک کے اس قدم کے ساتھ تعاون نہیں کرنا چاہئے۔اس نے اپنے شہریوں کو جبراً بھیجنے پر اعتراض کرتے ہوئے ان کے اس کام میں معاون بننے سے صاف انکار کردینا چاہئے۔ محترم اناشیا نے مزید کہا ’’افغان مہاجرین کو لوٹائے جانے کے واقعات میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔افغانستان میں تشدد کے بڑھتے واقعات کے درمیان مہاجرین کو واپس لوٹائے جانے کےواقعات بھی بڑھ رہے ہیں۔یوروپی ممالک میں پناہ لینے والوں میں افغان شہری سب سے زیادہ ہیں۔انہیں محفوظ ماحول دینے کی ضرورت ہے۔ انہیں جبراً ان کے ملک نہیں بھیجا جائے‘‘۔

Loading...

Loading...