دہشت گردی سے متعلق پاکستان کا بلیک لسٹ ہونا تقریباً طے: ایف اے ٹی ایف چیف– News18 Urdu

دہشت گردی سے متعلق پاکستان کا بلیک لسٹ ہونا تقریباً طے: ایف اے ٹی ایف چیف

ایف اے ٹی ایف، بین الاقوامی مالی فنڈ یعنی آئی ایم ایف کو پاکستان کے بارے میں کچھ مشورہ بھی دے سکتا ہے۔ اگر ایف اے ٹی ایف نے آئی ایم ایف کا پاکستان کے خلاف کوئی مشورہ دیا تواسے تین سال کے لئے ملنے والے 6 بلین ڈالرکا بیل آوٹ پیکیج نہیں ملے گا۔

Jun 24, 2019 11:23 PM IST | Updated on: Jun 24, 2019 11:23 PM IST

عالمی ادارہ فائنانشیل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے صدرمارشل بلنگسلی نےکہا ہے کہ پاکستان کوان کاموں کو پورا کرنے کےلئے بہت محنت کرنی ہوگی، جو اس نے خود دہشت گردی پرلگام لگانے کے لئے طے کئے ہیں۔ یہ کام پاکستان کے ہائی لیول کمٹمنٹ کا حصہ ہے، جس میں پاکستان ہرطرح سے 'ایکشن پلان' کو پورا کرنے میں ناکام رہا ہے۔

پاکستان کو 2018 میں 'گرے لسٹ' میں ڈالا گیا تھا، جس کے بعد پاکستان نے اعلیٰ سطح پر سیاسی وعدے کئے تھے تاکہ اینٹی منی لانڈرنگ اوردہشت گردوں کو فنڈنگ ملنے جیسی پریشانیوں میں آنے والی ساختی خرابی کو دورکیا جاسکے اوردنیا کا اس کی معیشت میں اعتماد برقرار رہے۔

دہشت گردی سے متعلق پاکستان کا بلیک لسٹ ہونا تقریباً طے: ایف اے ٹی ایف چیف

ایف اے ٹی ایف چیف نے کہا ہے کہ پاکستان ہرطرح سے ایکشن پلان کا احترام کرنے میں ناکام رہا ہے۔ فائل فوٹو

Loading...

ایف اے ٹی ایف کی میٹنگ کے آخرمیں کہی گئی یہ بات

فلوریڈیا کےاورلینڈو میں ہوئی ایف اے ٹی ایف کی میٹنگ کےاخیرمیں خطاب کرتے ہوئے گزشتہ ہفتے بلنگسلی نے کہا تھا 'پورا امکان ہے کہ پاکستان کو بلیک لسٹ میں ڈالا جا سکتا ہے۔ یہ فیصلہ مستقبل میں ہونے والی میٹنگ میں لیا جائے گا کیونکہ ایکشن پلان کا وقت ابھی گزرا نہیں ہے اوراس کےلئےابھی پاکستان کے پاس اس سال کے ستمبرماہ تک کا وقت ہے'۔

اکتوبرمیں بلیک لسٹ ہوسکتا ہے پاکستان

ایف اے ٹی ایف کی آئندہ میٹنگ پیرس میں اکتوبرکے مہینے میں ہونے والی ہے، جس میں پاکستان کے ذریعہ دہشت گردی کوروکنے کے لئے اٹھائے گئے اقدامات کا جائزہ لیا جائے گا۔ اگرپاکستان اس میں ناکام رہتا ہے، تواسے بلیک لسٹ کردیا جائے گا۔ پاکستان کےمعاملے میں سختی برتتے ہوئے ایف اے ٹی ایف کے چیئرمین نے کہا کہ پاکستان اس کی حمایت نہیں کرتا ہے، لیکن یہ اعتراف نہیں کرتا کہ اس کے سبب کئی ممالک اورسرحد پارکی سرگرمیوں کو اقتصادی مدد پہنچنے کا خطرہ بھی رہتا ہے'۔

Loading...