لاس ویگاس شوٹ آوٹ پر اسٹیفن پیڈک کی گرل فرینڈ نے دیا یہ بیان

نیو یارک۔ گزشتہ دنوں لاس ویگاس میں اندھاندھند فائرنگ کرکے 58افراد کو موت کے گھاٹ اتارنے والے شخص کی گرل فرینڈ نے کہا کہ اسے اندازہ نہیں ہے کہ ان کے پارٹنر کا منصوبہ کیا تھا۔

Oct 05, 2017 04:43 PM IST | Updated on: Oct 05, 2017 04:45 PM IST

نیو یارک۔ گزشتہ دنوں لاس ویگاس میں اندھاندھند فائرنگ کرکے 58افراد کو موت کے گھاٹ اتارنے والے شخص کی گرل فرینڈ نے کہا کہ اسے اندازہ نہیں ہے کہ ان کے پارٹنر کا منصوبہ کیا تھا۔ اس کا دوست ’’رحمدل،چوکنا اور خاموش طبیعت ‘‘ کا شخص تھا۔ میریلیئس ڈینلے کا یہ بیان پولیس سے ملنے کے ایک گھنٹہ بعد آیا ہے جس میں اس نے کہا ’’ اسٹیفن پیڈک پراسرار زندگی جی رہا تھا‘‘۔ڈینلے نے کہا کہ وہ خود کشی کرنے کی بجائے بھاگنے کی پلاننگ کررہاتھا۔ لیکن اس نے اس سلسلہ میں تفصیلات نہیں بتائیں۔

بی بی سی نیوزکی ایک رپورٹ کے مطابق یہ ابھی تک معلوم نہیں ہوسکا ہے اس نے ایئر کنسرٹ پر اندھاندھند فائرنگ کیوں کی،کیونکہ یہ امریکہ کی تاریخ میں سب سے بدترین شوٹ آؤٹ تھی۔ خوفناک فائرنگ سے ایک گھنٹہ قبل اسٹیفن پیڈک جوا کھیل رہاتھا۔ اس سے بھی پہلے لاس ویگاس کے اوگڈون ہوٹل میں بھی ایک اوپن ایئر شو فیسٹول میں دیکھا گیاتھا۔ بدھ کے روز کلارک کاؤنٹی شیرف جوزف لومبارڈو نے ایک پریس کانفرنس میں کہا پولیس نے ہوٹل میں رکھی پیڈک کی کار سے دھماکہ خیز مادوں کے ساتھ 1600راؤنڈ گولیاں بھی برآمد کی ہے۔ شیرف نے کہا کہ ابھی تک اس کو تحریک دینے والے یا مدد گار پر اب بھی پرہ پڑا ہوا ہے۔ایف بی آئی نے کہا ہے کہ اب تک کسی دہشت گرد تنطیم سے اس کا تعلق ثابت نہیں ہوسکا ہے۔شیرف لومبارڈو نے صحافیوں کو بتایا کہ ’’ ہم ابھی تک اسے سمجھ نہیں پائے ہیں‘‘۔

لاس ویگاس شوٹ آوٹ پر اسٹیفن پیڈک کی گرل فرینڈ نے دیا یہ بیان

فلپائن میں چھٹیان گزارنے کے بعد یہاں پہنچنے والی میریلیئس ڈینلے نے ایف بی آئی کے سامنے سانحہ کو ’’انتہائی خوفناک اور ناقابل بیان ‘‘ قرار دیا۔

فلپائن میں چھٹیان گزارنے کے بعد یہاں پہنچنے والی میریلیئس ڈینلے نے ایف بی آئی کے سامنے سانحہ کو ’’انتہائی خوفناک اور ناقابل بیان ‘‘ قرار دیا۔ ڈینلے نے کہا کہ واقعہ سے قبل اس نے اس کے بارے کچھ نہیں بتایا جس کو میں کچھ سمجھ پاتی۔ پیڈک نے مجھےکبھی کچھ نہیں کہا یا کوئی کارروائی نہیں کی۔اس نے اپنے وکیل کے ذریعہ ایک بیان میں کہا تھا ’’میں اس سے پیار کرتا تھا اور ایک ساتھ خوشگوار مستقبل کی امید کرتا تھا‘‘۔

Loading...

Loading...