دانت کے درد سے پریشان خاتون کا اسپتال میں کیاگیا ریپ اور قتل– News18 Urdu

دانت کے درد سے پریشان خاتون کا اسپتال میں کیاگیا ریپ اور قتل

پاکستان میں کراچی سندھ سرکاری اسپتال پیش آیاافسوسناک واقعہ

Apr 23, 2019 01:19 PM IST | Updated on: Apr 23, 2019 01:19 PM IST

پاکستان میں کراچی کے سندھ سرکاری اسپتال میں ایک 26سالہ لڑکی کے ساتھ مبینہ طورپرعصمت دری اورقتل کے معاملے میں ایک ڈاکٹرسمیت اسپتال کے کم از کم چار ملازمین کے ملوث ہونے کا انکشاف ہواہے۔جیو نیوز کی رپورٹ کے مطابق خاتون اسپتال میں دانت کے درد کا علاج کرانے کےلئے گئی تھی جہاں ایک ڈاکٹر سمیت اسپتال کے چار ملازمین نے اس کی مبینہ طورپر عصمت دری کی اور بعد میں اسے قتل کردیا گیا۔26سالہ خاتون کا نام عصمت جنیجو ہے اور وہ ابراہیم حیدری کی رہنے والی تھی۔وہ دانت کے درد کا علاج کرانے اسپتال گئی تھی،جہاں ایک ڈاکٹر نے تین دیگر افسران کی مدد سے پہلے اسے نشہ کا انجیکشن دیا اور اس کی عصمت دری کی۔بعد میں اسے زہردے دیا گیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق مبینہ ملزم ابھی گرفت سے آزاد ہے اور اسے بھگوڑا قرار دے دیا گیا ہے۔اس معاملے میں تین افراد کو گرفتار کیاگیاہے۔ جن میں عامر،شہباز اور ولی محمد شامل ہیں۔ تینوں کو عدالت میں پیش کیاگیا۔جہاں سے انہیں عدالتی تحویل میں جیل بھیج دیاگیا۔

دانت کے درد سے پریشان خاتون کا اسپتال میں کیاگیا ریپ اور قتل

اس دوران سندھ کے وزیراعلی مراد علی شاہ نے اس واقعہ پرنوٹس لیا۔بتایاجاتا ہے کہ وہ پولیس کے روایہ سے ناراض ہیں ۔انہوں نے پولیس سے پوچھا ہے’’مجھے بتائے کہ کون عناصر خاتون مریض کی عصمت دری اور قتل میں ملوث ہیں۔‘‘شاہ نے کہا’’دانت کے درد سے پریشان خاتون مریض کی موت میرے لئے ناقابل برداشت ہے۔‘‘انہوں نے خاتون کے ساتھ مبینہ طورپرعصمت دری اور اس کے قتل کے معاملے میں ایف آئی آر درج کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ جانچ کے بارے میں جو بھی پیش رفت ہو اس سے انہیں مطلع کرائیں۔انہوں نے کہا کہ ایسا واقعہ برداشت نہیں کیاجاسکتا۔