سات مسلم ممالک سے امریکہ آنے پر پابندی سے متعلق حکم میں تبدیلی کریں گے ڈونالڈ ٹرمپ– News18 Urdu

سات مسلم ممالک سے امریکہ آنے پر پابندی سے متعلق حکم میں تبدیلی کریں گے ڈونالڈ ٹرمپ

جسٹس ڈپارٹپنٹ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ملک کی سکیورٹی کے پیش نظر ڈونالڈ ٹرمپ مقدمے میں زیادہ وقت برباد نہیں کریں گے اور وہ اس کی جگہ پر جلد ہی کوئی نیا راستہ نکالیں گے

Feb 17, 2017 12:21 PM IST | Updated on: Feb 17, 2017 12:21 PM IST

سین فرانسسکو: امریکہ کے صدر ڈونالڈ ٹرمپ سات مسلم اکثریت والے ملکوں سے امریکہ آنے پر پابندی لگانے سے متعلق سفرپر پابندی کے ایگزیکٹو میں جلد ہی تبدیلی کریں گے۔ جسٹس ڈپارٹپنٹ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ ملک کی سکیورٹی کے پیش نظر ڈونالڈ ٹرمپ مقدمے میں زیادہ وقت برباد نہیں کریں گے اور وہ اس کی جگہ پر جلد ہی کوئی نیا راستہ نکالیں گے۔

مسٹر ٹرمپ نے ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ سفرپر کیا گیا ان کا فیصلہ بہت ہی آسان تھا لیکن انتظامیہ کو اس معاملے میں عدالت سے خراب فیصلہ ملا۔‘‘انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں ان کا اگلا حکم قانونی فیصلوں کے مطابق ہوگا۔

سات مسلم ممالک سے امریکہ آنے پر پابندی سے متعلق حکم میں تبدیلی کریں گے ڈونالڈ ٹرمپ

اے پی

اس سے پہلے امریکہ کے ایک جج نے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی طرف سے سات مسلم اکثریت والے ملکوں کے مسافروں اور مہاجروں پر لگائی گئی پابندی پر عارضی طور پر پابندی لگا دی ہے۔جس کے بعد اسے نافذ کرنے کا عمل فی الحال رو ک دیا گیا ہے۔ٹرمپ انتظامیہ نے جمعرات کو اس فیصلے کے خلاف کہا تھا کہ تینوں جسس اس فیصلے کو غلط سمجھ رہے ہیں،جبکہ ایسا نہیں ہے۔

قابل ذکر ہےکہ مسٹر ٹرمپ نے اس سلسلے میں 27جنوری 2017 کو ایک ایگزیکیوٹو حکم جاری کیا تھا جس کے تحت سات ملکوں ایران، عراق، لیبیا، سوڈان، صومالیہ، شام اور یمن کے شہریوں کاامریکہ میں داخلے پر 90دنوں کےلئے عارضی طورپر پابندی لگانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔وہیں شام کے غیر معینہ مدت کےلئے پابندی کو چھوڑ کر ان ملکوں کے پناہ گزینوں کے معاملے میں یہ پابندی 120دنوں کے لئے تھی۔

Loading...

Loading...