ایران بیلسٹک میزائل پروگرام کے معاملہ پر بات چیت کا خواہشمند

واشنگٹن۔ ایران نے دنیا کی چھ بڑی طاقتوں کے ساتھ سال2015میں نیوکلیائی معاہدہ پر امریکہ کے ذریعہ سوالیہ نشان لگائے جانے کے درمیان اشارہ دیا ہے کہ وہ اپنے بیلسٹک میزائل پروگراموں پر پیدا ہوانے والی کشیدگی کوکم کرنے کیلئے بات چیت کا خواہشمند ہے۔

Oct 07, 2017 04:15 PM IST | Updated on: Oct 07, 2017 04:15 PM IST

واشنگٹن۔ ایران نے دنیا کی چھ بڑی طاقتوں کے ساتھ سال2015میں نیوکلیائی معاہدہ پر امریکہ کے ذریعہ سوالیہ نشان لگائے جانے کے درمیان اشارہ دیا ہے کہ وہ اپنے بیلسٹک میزائل پروگراموں پر پیدا ہوانے والی کشیدگی کوکم کرنے کیلئے بات چیت کا خواہشمند ہے۔

اس سے قبل امریکہ کی ڈونلڈ ٹرمپ حکومت نے ایران پر نیوکلیائی معاہدہ کی خلاف ورزی کا الزام لگاتے ہوئے اسے ’بکواس‘ اور بیکار قرار دیا تھا،اور کہا تھا کہ سابق صدر براک اوبامہ کے دور میں ہوئے اس معاہدہ کو کبھی بھی منسوخ کیا جاسکتا ہے۔

ایران بیلسٹک میزائل پروگرام کے معاملہ پر بات چیت کا خواہشمند

علامتی تصویر

اس کے رد عمل میں ایران نے کہا تھا کہ وہ اپنی سلامتی کیلئے بیلسٹک میزائلوں کی صلاحیت بڑھانے کی سمت میں کام جاری رکھے گا۔ ایک ایرانی افسر نے اپنی شناخت خفیہ رکھنے کی شرط پر جمعہ کو کہا تھا کہ گزشتہ مہینے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اجلاس کے علاوہ ایران نے دنیا کی چھ طاقتوں (امریکہ ،برطانیہ،فرانس ،روس،جرمنی اور چین) سےکہا تھا کہ وہ اپنے بیلسٹک میزائل کے معاملہ پر کشیدگی کم کرنے کیلئے مذاکرات کا خواہشمند ہے۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز