ایران نے امریکہ کو مزید پابندیوں کے بارے میں خبردار کیا

بیروت/ دوبئی۔ ایران نے امریکہ کی جانب سے پاسداران انقلاب کور کو مبینہ طور پر دہشت گرد گروپ قرار دیئے جانے پر اسے خبردار کیا ہے کہ اگر ہم پر مزید بندشیں عائد کی گئیں تو امریکہ کے علاقائی فوجی اڈے خطرے میں پڑجائیں گے۔

Oct 08, 2017 08:42 PM IST | Updated on: Oct 08, 2017 08:42 PM IST

بیروت/ دوبئی۔ ایران نے امریکہ کی جانب سے پاسداران انقلاب کور کو مبینہ طور پر دہشت گرد گروپ قرار دیئے جانے پر اسے خبردار کیا ہے کہ اگر ہم پر مزید بندشیں عائد کی گئیں تو امریکہ کے علاقائی فوجی اڈے خطرے میں پڑجائیں گے۔ یہ انتباہ ایسے وقت دیا گیا ہے جب وہائٹ ہاؤس کی طرف سے جمعہ کو یہ اعلان کیا گیا کہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ ایران کے میزائیلی تجربوں، دہشت گردی کی ’پشت پناہی‘ اور سائبر آپریشن کے حوالوں سے ایران سے متعلق نئی حکمت عملی کے تحت امریکہ کے نئے اقدامات کا اعلان کریں گے۔

سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق پاسداران انقلاب کے کمانڈر محمد علی جعفری نے کہا کہ جیسا کہ ہم پہلے اعلان کرچکے ہیں کہ پابندیوں سے متعلق امریکہ کا نیا قانون منظور ہوجاتا ہے تواس ملک کو اپنے علاقائی اڈوں کو ایران کے میزائیلوں کی دو ہزار کلومیٹر دور تک وار کرنے کی حد سے باہررکھنا ہوگا۔ جعفری نے مزید کہا کہ اضافی پابندیوں کے بعد امریکہ کے ساتھ آئندہ مذاکرات کے امکانات ختم ہوجائیں گے۔

ایران نے امریکہ کو مزید پابندیوں کے بارے میں خبردار کیا

ایرانی صدر حسن روحانی: فائل فوٹو

جعفری نے کہا کہ اگر پاسداران انقلاب کو دہشت گرد گروپ قرار دینے سے متعلق امریکی حکومت کی حماقت کی خبر صحیح ہے تو پاسداران انقلاب بھی پوری دنیا اور بالخصوص مشرق وسطی مین امریکی افواج کو اسلامک اسٹیٹ کے مماثل تصور کرے گا۔ پاسداران انقلاب ایران کی سب سے طاقت ور داخلی اور بیرونی سکیوٹی فورس ہے اور اس کا انٹلی جنس اور نیم فوجی بازو اور پاسداران انقلاب سے منسلک بعض افراد اور اکائیاں گیر ملکی دہشت گرد نظیموں کی امریکی فہرست میں شامل ہیں البتہ پوری تنظیم نہیں۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز