موصل میں کیمیائی حملے کا کوئی ثبوت نہیں:عراق

اقوام متحدہ۔ عراق نے کہا کہ موصل میں دولت اسلامیہ(آئی ایس آئی ایس) کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں سے حملے کا کوئی ثبوت اب تک نہیں ملا ہے۔

Mar 11, 2017 02:44 PM IST | Updated on: Mar 11, 2017 02:44 PM IST

اقوام متحدہ۔ عراق نے کہا کہ موصل میں دولت اسلامیہ(آئی ایس آئی ایس) کی جانب سے کیمیائی ہتھیاروں سے حملے کا کوئی ثبوت اب تک نہیں ملا ہے۔ اقوام متحدہ میں عراق کے سفیر محمد علی الحاكم نے دارالحکومت بغداد میں حکام سے کہا، "داعش کی طرف سے کیمیائی ہتھیاروں سے حملے کے واقعی کوئی ثبوت نہیں ہیں۔" اسلامی اسٹیٹ کا ہی ایک دوسرا نام داعش ہے۔

اقوام متحدہ نے گذشتہ ہفتہ کہا تھا کہ یکم مارچ سے موصل پر دولت اسلامیہ شاید کیمیائی ہتھیاروں سے حملے کر رہا ہے جس میں خواتین اور بچوں سمیت کل 12 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ موصل میں امریکی حمایت یافتہ عراقی سکیورٹی فورسز اور دہشت گردوں کے درمیان جنگ چل رہی ہے۔

موصل میں کیمیائی حملے کا کوئی ثبوت نہیں:عراق

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز