اسرائیل کا آزادی صحافت پر حملہ ، مغربی کنارے میں کام کرنے والی 8 میڈیا پروڈکشن کمپنیوں پر لگائی بندش

اسرائیلی فوج کے ایک اعلان کے مطابق اس نے دہشت گردی پر اکسانے والا مواد نشر کرنے پر مغربی کنارے میں کام کرنے والی آٹھ میڈیا پروڈکشن کمپنیوں کو چھ ماہ کے لیے بند کر دیا ہے۔

Oct 18, 2017 08:39 PM IST | Updated on: Oct 18, 2017 08:39 PM IST

رملہ : اسرائیلی فوج کے ایک اعلان کے مطابق اس نے دہشت گردی پر اکسانے والا مواد نشر کرنے پر مغربی کنارے میں کام کرنے والی آٹھ میڈیا پروڈکشن کمپنیوں کو چھ ماہ کے لیے بند کر دیا ہے۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان افیخائے ادرعے نے اپنی ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ اسرائیلی فوج اور سکیورٹی فورسز کی مشترکہ کارروائی میں میڈیا اور پروڈکشن سے تعلق رکھنے والی 8 فلسطینی کمپنیوں پر چھاپہ مارا گیا جن پر شبہ تھا کہ وہ دہشت گردی پر اکسانے اور اس کو سراہنے کے حوالے سے مواد نشر اور ارسال کر رہی ہیں ۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق فلسطینی حکومت کے سرکاری ترجمان یوسف المحمود نے ایک فلسطینی خبر رساں ایجنسی کو دیے گئے بیان میں کہا کہ قابض افواج نے فلسطینی شہروں میں ان میڈیا دفاتر کے پر دھاوے بول کر تمام بین الاقوامی قوانین کی دھجیاں اڑا دیں ۔المحمود کے مطابق یہ دھاوے فرضی حیلوں کی بنیاد پر مارے گئے جن کو فلسطینی قوم کے خلاف قابض حکام کی جارحیت کے سوا کوئی دوسرا نام نہیں دیا جا سکتا۔

اسرائیل کا آزادی صحافت پر حملہ ، مغربی کنارے میں کام کرنے والی 8 میڈیا پروڈکشن کمپنیوں پر لگائی بندش

مذکورہ کمپنیاں کئی غیر ملکی ، عربی اور فلسطینی سیٹلائٹ چینلوں کو میڈیا سروسز فراہم کرتی ہیں۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان نے الخلیل، بیت لحم، رام اللہ اور نابلس میں ان کمپنیوں کے دفاتر پر چھاپوں کے وڈیو کلپ بھی پوسٹ کیے ہیں۔ کمپنیوں کی بندش کے دوران متعدد فلسطینیوں کو گرفتار بھی کیا گیا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز