شام پر 59 میزائل داغ کر ٹرمپ نے صرف 4 منٹ میں ضائع کئے 6 ارب روپے

Apr 07, 2017 03:17 PM IST | Updated on: Apr 07, 2017 03:17 PM IST

 جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب میں امریکہ نے پہلی مربہ شام کی اسد حکومت پر حملہ کیا۔ امریکی نیوی نے یہ حملے میڈٹیرين سی سے اسد حکومت کے کنٹرول والے ائیر بیس اور دیگر فوجی اڈوں کو نشانہ بنا کر کئے ۔

رپورٹوں کے مطابق ٹرمپ کے حکم پر امریکی بحریہ نے 4 منٹ کے اندر یکے بعد دیگرے 59 ٹام ہاک میزائل داغ كرتقریبا 6 ارب سے زیادہ روپے (94 ملین امریکی ڈالر) خرچ کردئے ۔ رپورٹوں کی مانیں تو ایکٹام ہاک میزائل کی قیمت تقریبا 10 کروڑ روپے سے زیادہ ہے۔ ٹام ہاک میزائل کے استعمال کے پیچھے اس کا اچوک نشانہ ہے۔ یہ تقریبا 900 سمندری میل دور تک مار کر سکتا ہے۔

شام پر 59 میزائل داغ کر ٹرمپ نے صرف 4 منٹ میں ضائع کئے 6 ارب روپے

خصوصیات ، جو ٹام ہاک کو بناتی ہیں دی بیسٹ

امریکی بحریہ کے لئےٹام ہاک کروز میزائل کی ترقی 1970 کی دہائی میں کی گئی تھی ۔ بعد میں مختلف پروجیکٹ کے تحت اس میں اصلاح کیا گیا۔

اسے سب سے پہلے 'آپریشن ڈیزرٹ اسٹورم کے تحت 1991 میں استعمال کیا جاتا تھا۔ امریکی جنگی جہاز نے گزشتہ سال اکتوبر میں یمن میں اس کا استعمال کیا تھا۔

یہ میزائل 20 فٹ طویل ہے اور اس کا وزن 2900 پونڈ ہے۔ اس پنکھے 8 فٹ 9 انچ کے ہیں۔

امریکی بحریہ کے مطابقٹام ہاک 550 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے ایک بار میں 1000 پونڈ دھماکہ خیز مواد لے جا سکتا ہے۔

اس میزائل کو ہدف مقرر کرکے تقریبا 900 سمندری میل دور تک داغا جا سکتا ہے۔ اسے پائلٹ کی ضرورت نہیں پڑتی ہے۔

ایک میزائل کی قیمت تقریبا 1.59 ملین امریکی ڈالر یعنی تقریبا 102380895 روپے ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز