جادھو کیس : ہندوستان کے حق میں فیصلہ آیا تو پاکستان کیلئے ویٹو استعمال کر سکتا ہے چین

May 15, 2017 09:42 AM IST | Updated on: May 15, 2017 10:16 AM IST

پیر کو ہندوستان اور پاکستان آمنے سامنے ہوں گے ۔ تقریبا 18 سال کے بعد انٹرنیشنل کورٹ میں دونوں ملک كلبھوش جادھو معاملے کو لے کر اپنی اپنی دلیل پیش کریں گے ۔ پاکستان جہاں جادھو کو جاسوسی کے الزام میں موت کی سزا دینے پر بضد ہے وہیں ہندوستان اسے غیر انسانی بتا رہا ہے کیونکہ 18 مرتبہ درخواست کے باوجود جادھو کو قانونی مدد دینے سے پاکستان انکار کر چکا ہے ۔

آئیے جانتے ہیں کہ ہندوستان کی دلیل کو چیلنج کرنے کے لئے پاکستان کیا کیا ہتھکنڈے اپنا سکتا ہے اور کس طرح اس معاملے میں بچ سکتا ہے ۔

جادھو کیس : ہندوستان کے حق میں فیصلہ آیا تو پاکستان کیلئے ویٹو استعمال کر سکتا ہے چین

بین الاقوامی قانون کے ایک ماہر نے کہا کہ پاکستان 1999 میں ہندوستان کی طرف سے اپنی سرحد میں گھسے پاکستانی طیارے کو مار گرانے کا حوالہ دے کر آئی سی جے کے سامنے دائرہ اختیار کا مسئلہ اٹھا سکتا ہے ۔ طیارے کو مار گرانے کے معاملے میں ہندوستان نے اس بنیاد پر بین الاقوامی عدالت کے دائرہ اختیار کو ماننے سے انکار کر دیا تھا کہ وہ دولت مشترکہ ممالک کے درمیان تنازعہ کے مقدمات کی سماعت نہیں کرسکتی ۔

انٹرنیشنل کورٹ اگر ہندوستان کے حق میں فیصلہ دیتا ہے، اس کے باوجود پاکستان اس فیصلے کو ٹھکرا سکتا ہے ۔ اگر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے پانچ مستقل رکن ممالک میں سے کوئی بھی ایک ملک اپنے ویٹو پاور کا استعمال کر دے ۔  ایسا معاملہ اس سے پہلے نکاراگوا بمقابلہ امریکہ کے معاملہ میں ہو چکا ہے ۔ یہاں پر پاکستان کو چین کی مدد ملنی تقریبا طے ہی مانی جارہی ہے ۔ یعنی اگر فیصلہ پاکستان کے خلاف آتا ہے تو چین ویٹو پاور کا استعمال کر کے اس کو بچا سکتا ہیں ۔

پاکستان کی فوجی عدالت کی طرف سے ہندوستانی شہری كلبھوش جادھو کو سنائی گئی موت کی سزا پر روک لگانے کے لئے ہندوستان کی جانب سے آئی سی جے میں دائر عرضی پر سماعت کا براہ راست نشر کیا جائے گا ۔ اقوام متحدہ کے ہندوستان میں واقع انفارمیشن سینٹر نے یہ معلومات دی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز