آئی سی جے میں بھی نظر آئی ہند-پاک حکام میں تلخی ، ہاتھ ملانے کی بجائے ایسے ملے!۔

May 15, 2017 11:55 PM IST | Updated on: May 15, 2017 11:55 PM IST

نئی دہلی : ہندوستان اور پاکستان کے درمیان تعلقات میں تلخی ہیگ میں بھی دیکھنے کو ملی۔ انٹرنیشنل كورٹ آف جسٹس (آئی سی جے ) میں كلبھوش جادھو کے معاملہ کی سماعت سے پہلے ہندوستانی افسر نے ایک پاکستانی افسر سے ہاتھ نہیں ملایا۔ ہاتھ ملانے کی بجائے انہوں نے سلام کیا۔

ہندوستانی وزارت خارجہ میں پاکستان کے محکمہ کے سربراہ دیپک متل نے پاکستان کے جنوبی ایشیا اور سارک کے ڈی جی محمد فیصل سے ہاتھ نہیں ملایا۔ اس کی بجائے انہوں نے سلام کیا۔ دلچسپ بات یہ رہی کہ متل نے پاکستانی ٹیم کے کچھ ارکان جن میں پاک اٹارنی جنرل بھی شامل تھے، سے ہاتھ ملایا۔

آئی سی جے میں بھی نظر آئی ہند-پاک حکام میں تلخی ، ہاتھ ملانے کی بجائے ایسے ملے!۔

گزشتہ ہفتہ جاپان میں ایک پروگرام کے دوران جب وزیر خزانہ ارون جیٹلی اور پاکستان کے وزیر خزانہ ایک اسٹیج پر آئے تھے ، تب بھی ہندوستان -پاکستان کے رشتوں میں چل رہی کشیدگی دیکھنے کو ملی تھی۔ كلبھوش جادھو کو پھانسی کی سزا اور دو ہندوستانی فوجیوں کے سرحد پر سر کاٹے جانے کے معاملہ کے بعد سے دونوں ممالک کے تعلقات میں کافی دوریاں آئی ہیں۔

كلبھوش معاملہ کو لے کر ہندوستان نے آئی ایس جے کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے۔ آٹھ مئی کو انہیں پاکستان کی ایک فوجی عدالت نے جاسوسی کے الزام میں پھانسی کی سزا سنائی تھی۔ ہندوستان نے پاکستان پر ویانہ معاہدے کی خلاف ورزی کا الزام لگایا ہے۔ آئی ایس جے نے جادھو کی پھانسی پر روک لگا دی ہے۔ وہاں پر اس معاملہ میں سماعت چل رہی ہے۔ ہندوستان نے اپنی اپیل میں کہا ہے کہ جادھو کا ایران سے اغوا کیا گیا۔ وہیں پاکستان کا کہنا ہے کہ اسے بلوچستان سے پکڑا گیا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز