رحم کی سبھی درخواستوں کے تصفیہ ہونے تک كلبھوش کو پھانسی نہیں دی جائے گی : پاکستان

Jun 01, 2017 07:05 PM IST | Updated on: Jun 01, 2017 07:05 PM IST

اسلام آباد : آئی سی جے میں منہ کی کھانے کے بعد اب پاکستان نے كلبھوش جادھو کی پھانسی پر اپنا موقف تبدیل کرلیا ہے۔ اب پاکستان نے کہا ہے کہ كلبھوش جادھو کو اس وقت تک پھانسی نہیں دی جائے گی، جب تک کہ اس کی رحم کی درخواستوں کا تصفیہ نہیں ہو جاتا۔ ہندوستان کے لیے یہ راحت کی خبر ہے۔

پاکستان کے محکمہ خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے بتایا کہ عالمی عدالت کے پھانسی پر روک کے فیصلے کے علاوہ بھی جادھو رحم کی عرضیوں کے تصفیہ نہ ہونے تک زندہ رہے گا۔ اس کے تحت سب سے پہلے آرمی چیف اور بعد میں صدر کے پاس رحم کی درخواست دی جا سکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان نے بین الاقوامی عدالت میں جو عرضی دائر کی دی تھی وہ جادھو تک کونسلر رسائی کے سلسلے میں تھی۔ ذکریا نے عالمی عدالت کے جادھو کی پھانسی پر روک کے فیصلے کو عام بات قرار دیا۔

رحم کی سبھی درخواستوں کے تصفیہ ہونے تک كلبھوش کو پھانسی نہیں دی جائے گی : پاکستان

ترجمان نے کہا کہ 'یہ اس لیے نہیں ہے کہ عالمی عدالت پاکستانی قانونی عمل کو لے کر اپیل عدالت کے طور پر کام کر سکتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ وکیل خاور قریشی نے عدالت کو مطلع کیا تھا کہ ہندوستان جو چاہ رہا ہے، وہ اس کو عدالت سے نہیں مل سکتا۔ انہوں نے عدالت سے یہ بھی کہا کہ ہندوستان پاکستان کی شبیہ خراب کرنے کیلئے میڈیا کا استعمال کر رہا ہے۔

بین الاقوامی کورٹ آف جسٹس نے گزشتہ ماہ كلبھوش جادھو کی پھانسی پر روک لگا دی تھی ۔ جادھو کو پاکستان کی ایک فوجی عدالت نے پھانسی کی سزا سنائی تھی۔ انہیں بلوچستان اور کراچی میں دہشت گردی پھیلانے کے الزام میں یہ سزا سنائی گئی ہے۔ ہندوستان نے ان الزامات کی تردید کی ہے اور انہیں فرضی بتایا ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز