پاکستان میں لاپتہ سماجی کارکن سلمان حیدر کی گھر واپسی

Jan 29, 2017 07:17 PM IST | Updated on: Jan 29, 2017 07:17 PM IST

اسلام آباد۔  رواں ماہ کے آغاز میں اسلام آباد سے پراسرار طریقے سے لاپتہ ہوجانے والے پاکستانی شاعر اور معروف سماجی کارکن سلمان حیدر بحفاظت اپنے گھر لوٹ آئے ہیں۔ سلمان حیدر کے بھائی ذیشان حیدر نے آج بتایا کہ "سلمان ٹھیک ہیں، وہ محفوظ ہیں اور ہمیں خوشی ہے کہ وہ ہمارے ساتھ واپس آ گئے ہیں"۔ ​​انہوں نے کہا کہ وہ خود ابھی تک اپنے بھائی سے ملاقات نہیں کر سکے ہیں جبکہ خاندان کے کئی دیگر افراد نے انفرادی طور پر سلمان حیدر سے ملاقات کی ہے۔ انہوں نے سلمان سے فون پر بات کی ہے۔

ذیشان نے کہا کہ "سلمان جلد کی بیماری میں مبتلا ہيں اس لیے میں ان کے بارے میں زیادہ فکر مند تھا، لیکن جب میں نے ان سے بات کی تھی، تو انہوں نے مجھے یقین دلایا کہ وہ پوری طرح صحت مند ہیں۔ خاندان کے جن لوگوں نے بھی ان سے ملاقات کی ہے انہوں نے بتایا کہ سلمان صحت مند اور خوش لگ رہے ہیں"۔ ذیشان نے یہ نہیں بتایا کہ اتنے دنوں تک ان کے بھائی کہا ں لاپتہ تھے۔ اس سے پہلے پولس ذرائع نے جیو نیوز چینل کو بتایا کہ چھ جنوری کو لاپتہ ہونے والے سلمان کی جمعہ کو دیر شام بحفاظت گھر لوٹنے کی تصدیق ہوئی ہے۔تاہم ان کے غائب ہونے کے بعد کے واقعات کی ابھی معلومات نہیں مل پائی ہے۔ لاپتہ ہونے والوں میں سلمان حیدر کے ساتھ چار دیگر انسانی حقوق کارکن و قاص گورايا، وسیم سعید، احمد رضا نصیر اور سمیر عباس شامل تھے۔

پاکستان میں لاپتہ سماجی کارکن سلمان حیدر کی گھر واپسی

علامتی تصویر: رائٹرز

ان کارکنوں کے حامیوں نے حکومت کی خفیہ محکمہ پر پراسرار طریقے سے انہیں گرفتار کرنے کا الزام لگایا تھا۔ پاکستان کی میڈیا میں یہ سوال بھی اٹھا تھا کہ کیا اس معاملے میں حکومت یا انٹیلی جنس ایجنسی شامل ہے، لیكن حکومت نے ان الزامات کو مسترد کر دیا تھا۔ ان کارکنوں کے لاپتہ ہونے کے بعد ان پر سوشل میڈیا پر توہین رسالت کے الزام لگائے گئے تھے۔ سلمان حیدر کو صوبہ بلوچستان میں لوگوں کے غائب ہونے کی مخالفت میں مہم چلانے کے لئے جانا جاتا ہے۔ وہ فیس بک پر ' بھینسا' نامی ایک گروپ چلاتے ہیں۔اس کے ذریعے وہ بنیاد پرست مذہبی تنظیموں کے ساتھ ساتھ  پاکستانی فوج کی بھی نکتہ چینی کرتے رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز