روہنگیا مسلمانوں کے خلاف کارروائی روکنے کیلئے میانمار کے پاس آخری موقع : اقوام متحدہ سکریٹری جنرل

Sep 17, 2017 09:20 PM IST | Updated on: Sep 17, 2017 09:20 PM IST

ہانگ کانگ: اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل انٹونیوگوٹیرس نے کہا کہ میانمار کی لیڈر آنگ سان سو چی کے پاس فوج کی جارحانہ کارروائی کو روکنے کا ایک آخری موقع ہے، جس کی وجہ سے ہزاروں روہنگیا مسلمانوں کو بنگلہ دیش ہجرت کرنے پر مجبور ہونا پڑ رہا ہے۔

مسٹر گوٹیرس نے بی بی سی کو بتایا کہ محترمہ سوچی کے پاس روہنگیا کے خلاف مہم کو روکنے کا ایک آخری موقع ہے۔ انہوں نے کہا '' میرا خیال ہے کہ اگر وہ موجودہ حالات کو نہیں بدلتی ہیں، تو سانحہ انتہائی خوفناک ہو گا اور بدقسمتی سے مجھے نہیں پتہ کہ اسے مستقبل میں کس طرح تبدیل کیا جا سکے گا؟ ''

روہنگیا مسلمانوں کے خلاف کارروائی روکنے کیلئے میانمار کے پاس آخری موقع : اقوام متحدہ سکریٹری جنرل

جنرل سکریٹری نے کہا کہ روہنگیا کے لوگوں کو گھر واپس جانے کی اجازت دی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ واضح ہوگیا ہے کہ میانمار کی فوج کو ملک میں اب بھی 'اہمیت حاصل ہے اور رخائن ریاست میں زمینی طور پر جو کیا جا رہا اس کے لئے دباؤ ڈالا جا رہا ہے۔

نوبل انعام یافتہ محترمہ سوچی کو روہنگیا کے معاملے پر تنقید کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ وہ نیو یارک میں اقوام متحدہ کے جنرل اسمبلی میں بھی شرکت کے لئے نہیں گئیں، جس کا سیشن کل سے شروع ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ دہشت گردوں کے مفادات کو فروغ دینے والی فرضی خبروں سے کشیدگی کو تقویت مل رہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز