میانمار نائب صدر کا اقوام متحدہ میں خطاب ، راخین میں سلامتی دستے کو اجتماعی نقصان سے بچنے کا دیا گيا حکم

Sep 21, 2017 07:36 PM IST | Updated on: Sep 21, 2017 07:36 PM IST

اقوام متحدہ: میانمار کے نائب صدرنے گزشتہ روز اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں کہا کہ جنوبی میانمار کے صوبہ راخین میں سلامتی دستوں کو اجتماعی نقصان اور بے قصور شہریوں کو گزند پہنچانے سے بچنے کے لئے مکمل تدبیریں کرنے کی ہدایت دی گئی ہے، جہاں سے ہزاروں روہنگیا آبادی کے افراد در بدر ہوئے ہيں۔

راخین میں روہنگیا آبادی کے خلاف پرتشدد کارروائی 25 اگست کو روہنگيا باغیوں کے حملے کے بعد شروع ہوئی تھی، جس میں میانمار فوج نے انتہائی پرتشدد کارروائی کی ہے، جس کے لئے ان پر انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے ارتکاب کا الزام لگایا گيا ہے اور بین الاقوامی برادری بشمول اقوام متحدہ نے فوجی کارروائی شدید مذمت کی ہے۔

میانمار نائب صدر کا اقوام متحدہ میں خطاب ، راخین میں سلامتی دستے کو اجتماعی نقصان سے بچنے کا دیا گيا حکم

میانمار کے نائب صدر ہینری وان تھیو ۔ گیٹی امیج

جنرل اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے میانمار کے نائب صدر ہینری وان تھیو نے کہا کہ راخین سے صرف روہنگیا مسلمان ہی فرار نہيں ہوئے ہيں، بلکہ دیگر طبقات کے لوگ بھی در بدر ہوئے ہيں۔ انہوں نے کہا کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے معاملوں کو قانون کے مطابق سختی سے نمٹایا جائے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز