abu asmi says sp bsp alliance will contest all 48 seats in maharashtra– News18 Urdu

مہاراشٹرمیں بھی ایس پی - بی ایس پی نےکیا کانگریس کودرکنار، ابوعاصم اعظمی کا اتحاد کا 48 پارلیمانی حلقوں میں امیدواراتارنے کا اعلان

ابوعاصم اعظمی نے کہا کہ دونوں پارٹیاں سماجوادی پارٹی اوربہوجن سماج پارٹی مل کر'90-85 فیصدی' کی نمائندگی کرتی ہیں۔ ایسے میں ایس پی - بی ایس پی کا اتحاد اترپردیش کی طرح مہاراشٹر میں بی جے پی اورکانگریس کو شکست دے گا۔

Mar 19, 2019 07:22 PM IST | Updated on: Mar 19, 2019 07:23 PM IST

ممبئی: اترپردیش میں کانگریس سے انتخابی اتحاد نہ ہونےکے بعد سماجوادی پارٹی اور بہوجن سماج پارٹی نے مہاراشٹرمیں تمام پارلیمانی نشستوں کا انتخاب لڑنے کا اعلان کردیا ہے۔ سماجوادی پارٹی کے صوبائی صدراورممبراسمبلی ابو عاصم اعظمی نے آج یہاں سمراٹ ہوٹل میں مشترکہ پریس کانفرنس میں یہ اعلان کیا۔ یہ فیصلہ دونوں پارٹیوں کے قومی لیڈران مایاوتی اوراکھلیش یادوکے فیصلے کے بعد لیا گیا ہے۔

ابوعاصم اعظمی نے کہا کہ دونوں پارٹیاں سماجوادی پارٹی اوربہوجن سماج پارٹی مل کر'90-85 فیصدی' کی نمائندگی کرتی ہیں۔ ایسے میں ایس پی - بی ایس پی کا اتحاد اترپردیش کی طرح مہاراشٹر میں بی جے پی اورکانگریس کو شکست دے گا۔ واضح رہے کہ کبھی ایک دوسرے کے سخت مخالف رہی سماجوادی اور بہوجن سماج پارٹی اترپردیش میں اتحاد کرکے الیکشن لڑ رہی ہیں۔ دونوں پارٹیوں نے آپس میں سیٹوں کی تقسیم بھی کرلی ہے، اس اتحاد میں کانگریس کو جگہ نہیں ملی ہے۔

مہاراشٹرمیں بھی ایس پی - بی ایس پی نےکیا کانگریس کودرکنار، ابوعاصم اعظمی کا اتحاد کا 48 پارلیمانی حلقوں میں امیدواراتارنے کا اعلان

فائل فوٹو

Loading...

ابوعاصم اعظمی ںےایک سوال کے جواب میں کہا کہ میں پارلیمانی الیکشن نہیں لڑوں گا بلکہ ریاست میں ایس پی کو مستحکم کرنےکے لئے اپنے امیدواروں کو مضبوط کروں گا۔ ابوعاصم اعظمی نے یہ دعوی کیا ہے کہ ہم پوری ریاست میں پارٹی کو فتح دلائیں گے۔ مہاراشٹرمیں کانگریس کی لیڈرشپ نہیں ہے، ہم نے اسمبلی الیکشن میں بھی کانگریس سے دھوکہ کھایا ہے رات میں سمجھوتہ توڑنے میں یہ پارٹی ماہرہے۔

مہاراشٹر میں سماجوادی پارٹی کے ریاستی صدر ابو عاصم اعظمی اوربی ایس پی کے لیڈران پریس کانفرنس کو خطاب کرتے ہوئے۔

بی ایس پی لیڈراوررکن پارلیمان اشوک سدھارتھ نےکہا کہ کانگریس دلتوں اورمسلمانوں کو پسماندہ بنانے کے پس پشت ذمہ دارہے اورانتخابی سمجھوتہ نہ کرنے کی ذمہ دارصرف کانگریس ہے۔ اترپردیش میں دلتوں اور مسلمانوں کے ووٹ ضرورملیں گے، ذات پات اورحصہ داری پرہی ہم سمجھوتہ کرتے ہیں اورسب کوبرابری کاحقوق دیتے ہیں۔ اترپردیش میں بی ایس پی مضبوط ہے، آج کانگریس اوربی جے پی کی ڈاکٹربابا صاحب کے نام لینا مجبوری ہے۔ ودربھ میں بھی انتخابی طوربی ایس پی اورایس پی مضبوط ہے، ہمارے قومی لیڈران اکھلیش یادواورمایاوتی ایک ساتھ ریلیاں اورانتخابی جلسے جلوس منعقد کریں گے۔

وہیں مہاراشٹرمیں گزشتہ ماہ ہی بی جے پی کے 25 اورشیو سینا کے 23 لوک سبھا سیٹوں پرالیکشن لڑنے پرمہرلگ گئی تھی۔ شیو سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے اوربی جے پی کے قومی صدرامت شاہ کے درمیان ماتوشری میں 50 منٹ تک چلی میٹنگ میں یہ فیصلہ لیا گیا تھا۔ مہاراشٹرمیں دوبارہ اقتدارمیں آنے پربی جے پی اورشیو سینا کے درمیان عہدے اور ذمہ داریوں کو مساوی طورتقسیم کیا جائے گا۔ شیو سینا کے ساتھ بی جے پی کے اتحاد کا اعلان امت شاہ اورادھو ٹھاکرے نے مشترکہ طورپرپریس کانفرنس کرکے کیا تھا۔

محی الدین کی رپورٹ

Loading...