after the demise of manohar parrikar political crisis deepens in goa as bjp coalition not reached any decision yet na منوہر پاریکر کے انتقال سے گوا میں سیاسی بحران، نئے وزیر اعلیٰ پر نہیں ہو پا رہا ہے اتفاق رائے– News18 Urdu

منوہر پاریکر کے انتقال سے گوا میں سیاسی بحران، نئے وزیر اعلیٰ پر نہیں ہو پا رہا ہے اتفاق رائے

مرکزی وزیر نتن گڈکری اتوار کو رات 12:30 بجے حکومت بنانے کے امکان پر بات چیت کرنے کے لئے گوا پہنچے۔

Mar 18, 2019 10:11 AM IST | Updated on: Mar 18, 2019 10:19 AM IST

گوا کے وزیر اعلیٰ منوہر پاریکر نے اتوار کو اپنی رہائش گاہ پر آخری سانس لی۔ پاریکر ایک سال سے پینکریاٹک کینسر سے جوجھ رہے تھے۔ ان کے انتقال کے بعد گوا میں سیاسی بحران گہرا ہو گیا ہے۔ کانگریس کی طرف سے حکومت سازی کا دعویٰ ٹھونکنے کے بعد بی جے پی قیادت ریاست میں نئے وزیر اعلیٰ کی تلاش میں مصروف ہے۔ مرکزی وزیر نتن گڈکری اتوار کو رات 12:30 بجے حکومت بنانے کے امکان پر بات چیت کرنے کے لئے گوا پہنچے۔

پاریکر کی جگہ لینے کے لئے بی جے پی کی طرف سے وشوجیت رانے اور پرمودی ساونت کے ناموں کا مشورہ دیا گیا ہے۔ لیکن ذرائع کی مانیں تو بی جے پی کی اتحادی پارٹیوں مہاراشٹر وادی گومانتک پارٹی( ایم جی پی)، گوا فارورڈ پارٹی اور آزاد ارکان اسمبلی میں ان ناموں کو لے کر اتفاق رائے نہیں ہو پا رہا ہے۔ چنانچہ نئے وزیر اعلیٰ کے لئے گوا کو ابھی مزید انتظار کرنا پڑے گا۔

منوہر پاریکر کے انتقال سے گوا میں سیاسی بحران، نئے وزیر اعلیٰ پر نہیں ہو پا رہا ہے اتفاق رائے

منوہر پاریکر کے ساتھ وشوجیت رانے: فائل فوٹو۔

Loading...

ہفتہ کے روز منوہر پاریکر کی حالت بیحد نازک ہونے کی خبر سامنے آنے کے بعد بی جے پی قیادت نے پنجی پہنچ کر اتحادی پارٹیوں کے ارکان اسمبلی کے ساتھ میٹنگ کی۔ میٹنگ سے باہر آنے کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے گوا فارورڈ پارٹی کے وجے سردیسائی نے کہا کہ ’’ ہم نے منوہر پاریکر کو حمایت دی تھی نہ کی بی جے پی کو۔ اب جب وہ نہیں رہے تو متبادل کھلے ہوئے ہیں۔ ہم گوا میں استحکام چاہتے ہیں۔ ہم نہیں چاہتے کہ اسمبلی تحلیل کی جائے۔ ہم بی جے پی کی قانون ساز پارٹی کے فیصلہ کا انتظار کریں گے اور اس کے بعد اگلا قدم اٹھائیں گے‘‘۔

 

Loading...