دادری سانحہ : فارنسک رپورٹ میں انکشاف ، گھر میں گائے کا گوشت نہیں بلکہ مٹن تھا– News18 Urdu

دادری سانحہ : فارنسک رپورٹ میں انکشاف ، گھر میں گائے کا گوشت نہیں بلکہ مٹن تھا

دادری۔ اتر پردیش کے دادری علاقے میں گائے کا گوشت رکھنے کے الزام میں فرقہ پرستوں نے جس محمد اخلاق نام کے ایک شخص کو قتل کر دیا تھا اب اس معاملے کی اصل حقیقت سامنے آ رہی ہے۔

Oct 09, 2015 08:21 AM IST | Updated on: Oct 09, 2015 03:09 PM IST

دادری۔ اتر پردیش کے دادری علاقے میں گائے کا گوشت رکھنے کے الزام میں فرقہ پرستوں نے جس محمد اخلاق نام کے ایک شخص کو قتل کر دیا تھا اب اس معاملے کی اصل حقیقت سامنے آ رہی ہے۔

ٹائمس آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق فارنسک رپورٹ پتہ چلا ہے کہ مقتول اخلاق کے گھر میں رکھا ہوا گوشت گائے کا نہیں بلکہ بکرے کا تھا۔  اس معاملے میں گوتم بدھ نگر انتظامیہ نے پہلے گھر میں رکھے گوشت کی جانوروں کے ڈاکٹر سے جانچ کرائی، اس کے بعد اسے متھرا لیب میں تحقیقات کے لئے بھیجا گیا اور اس میں پایا گیا کہ اس کے گھر پر گائے کا  نہیں، بکرے کا گوشت رکھا تھا۔

دادری سانحہ : فارنسک رپورٹ میں  انکشاف ، گھر میں  گائے کا گوشت  نہیں بلکہ مٹن تھا

بتا دیں کہ اتر پردیش میں غازی آباد ضلع کے دادری میں اخلاق کو صرف اس شبہ میں بری طرح پیٹ پیٹ کر قتل کر دیا گیا کہ اس نے گائے کا گوشت کھایا اور اسے اپنے گھر میں رکھا۔ سرعام ہوئی اس وحشیانہ کارروائی سے  اخلاق کی موقع پر ہی موت ہو گئی جبکہ بیٹا شدید زخمی ہے۔ غصے کا عالم یہ تھا کہ پولیس کے پہنچنے کے بعد بھی بھیڑ اخلاق اور اس کے بیٹے کو جانوروں کی طرح پیٹ رہی تھی۔ اس ظالمانہ قتل کے بعد ملک اور بیرون ملک میں اس کی شدید مذمت ہوئی۔ پولیس کے مطابق یہ خاندان گزشتہ 35 سالوں سے اس گاؤں میں رہ رہا تھا۔

Loading...