گجرات : 30 سال سے ویران مسجد پھر ہوئی آباد ، برادران وطن کی مدد سے بلند ہونے لگی اللہ اکبر کی صدا

گجرات میں انتخابی گہما گہمی کے درمیان ایک مسجد ہندو اور مسلمانوں کے اتحاد کی مثال پیش کررہی ہے ۔

Nov 16, 2017 05:40 PM IST | Updated on: Nov 16, 2017 05:40 PM IST
گجرات : 30 سال سے ویران مسجد پھر ہوئی آباد ، برادران وطن کی مدد سے بلند ہونے لگی اللہ اکبر کی صدا

احمد آباد : گجرات میں انتخابی گہما گہمی کے درمیان ایک مسجد ہندو اور مسلمانوں کے اتحاد کی مثال پیش کررہی ہے ۔ احمد آباد میں ہندووں کی مدد سے تقریبا 30 سال سے ویران ایک مسجد پھر سے آباد ہوگئی ہے۔ خیال رہے کہ بابری مسجد شہادت اور پھر 2002 گجرات فرقہ وارانہ فسادات کے خوف و ہراس کے باعث بعد ہندووں کی آبادی سے گھری مسجد سے مسلمانوں نے نماز کی ادائیگی بند کردی تھی ، لیکن مندروں کے درمیان میں تعمیر اس مسجد سے ایک مرتبہ پھر اللہ اکبر کی صدا گونجنے لگی ہے۔

احمد آباد کے کالوپور علاقہ میں مندروں کے درمیان گھری اس مسجد کے میناروں کی دوبارہ تعمیر کرائی گئی ہے، جہاں سے اذان کی صدائیں بلند ہونی شروع ہوگئی ہیں اور تقریبا 30 سالوں بعد اس میں پھر سے نماز کی ادائیگی ہونے لگی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اب وہاں نمازی بلا خوف پنج وقتہ نمازیں ادا کرنے لگے ہیں۔

دراصل یہ مسجد ہندووں کی آبادی اور مندروں سے گھری ہوئی ہے ۔ تقریبا 100 سالہ قدیم اس مسجد میں 1984 فسادات کے بعد نمازیوں کی تعداد کم ہوگئی تھی ، بابری مسجد کی شہادت کے بعد تقریبا خالی خالی ہی رہنے لگی تھی ، مگر گجرات فسادات کے بعد تو لوگوں کے دلوں میں کچھ ایسا خوف سماگیا کہ انہوں نے مسجد میں نماز کی ادائیگی ہی بند کردی اور وہاں جانے سے بھی گریز کرنے لگے ۔ تاہم اب برادران وطن کی مدد سے یہ مسجد ایک مرتبہ پھر آباد ہوگئی ہے اور نمازیں ادا ہونی شروع ہوگئی ہیں۔

Loading...

Loading...