بابری مسجد انہدام کیس کی سماعت دو ہفتے کے لئے ملتوی ، متعلقہ فریقوں کو حلف نامہ پیش کرنے کی ہدایت– News18 Urdu

بابری مسجد انہدام کیس کی سماعت دو ہفتے کے لئے ملتوی ، متعلقہ فریقوں کو حلف نامہ پیش کرنے کی ہدایت

سپریم کورٹ نے اترپردیش کے اجودھیا میں بابری مسجد ۔ رام جنم بھومی متنازعہ ڈھانچے کے انہدام کے معاملے کی سماعت 6 اپریل تک کے لئے آج ملتوی کردی

Mar 23, 2017 05:02 PM IST | Updated on: Mar 23, 2017 05:02 PM IST

نئی دہلی : سپریم کورٹ نے اترپردیش کے اجودھیا میں بابری مسجد ۔ رام جنم بھومی متنازعہ ڈھانچے کے انہدام کے معاملے کی سماعت 6 اپریل تک کے لئے آج ملتوی کردی۔

جسٹس پناکی چندر بوس اور جسٹس روہنگٹن ایف ۔ نریمن پر مشتمل ڈویژن بنچ نے کہا کہ ہم اس معاملے کی سماعت دو ہفتے کے بعد چھ اپریل کو کریں گے۔ اس دوران تمام متعلقہ فریق اس معاملے میں اپنا تحریری حلف نامہ پیش کریں۔

بابری مسجد انہدام کیس کی سماعت دو ہفتے کے لئے ملتوی ، متعلقہ فریقوں کو حلف نامہ پیش کرنے کی ہدایت

عدالت کو آج یعنی 23 مارچ کو یہ طے کرنا تھا کہ متنازعہ ڈھانچے کے انہدام کے معاملے میں بھارتیہ جنتاپارٹی (بی جے پی) کے سینئر لیڈر لال کرشن اڈوانی ، مرلی منوہر جوشی، اوما بھارتی، کلیان سنگھ، وشوہندو پریشد کے رہنما ونے کٹیار اور دیگر افراد کے خلاف ارتکاب جرم کی سازش رچنے کے الزام میں پھر سے مقدمے کی سماعت کی جانی چاہئے یا نہیں ۔

Loading...