بی جے پی ممبر اسمبلی کا متنازع بیان ، بھگوان رام بھی آجائیں تو آبروریزی کے واقعات روکے نہیں جاسکتے– News18 Urdu

بی جے پی ممبر اسمبلی کا متنازع بیان ، بھگوان رام بھی آجائیں تو آبروریزی کے واقعات روکے نہیں جاسکتے

بلیا کے بیریا سے بی جے پی کے ممبر اسمبلی سریندر سنگھ نے اناو آبروریزی کے واقعہ پر ایک مرتبہ پھر متنازع بیان دیا ہے۔

Jul 08, 2018 09:23 AM IST | Updated on: Jul 08, 2018 09:23 AM IST

بلیا کے بیریا سے بی جے پی کے ممبر اسمبلی سریندر سنگھ نے  آبروریزی کے واقعہ پر ایک مرتبہ پھر متنازع بیان دیا ہے۔ میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سریندر سنگھ نے کہا کہ میں دعوی کے ساتھ کہہ سکتا ہوں کہ اگر بھگوان رام بھی آجائیں تو اس طرح کے واقعات پر قابو نہیں پایا جاسکتا ۔ ایسے حالات میں سبھی لوگ ایک دوسرے کو اپنا مذہبی بھائی بہن سمجھ کر اس کا مقابلہ کریں۔

بی جے پی ممبر اسمبلی نے کہا کہ اخلاقیات کی بنیاد پر ہی ایسے واقعات پر قابو پایا جاسکتا ہے، آئین اور قانون کے دم پر ان واقعات کو کبھی نہیں روکا جاسکتا۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ خطرناک مجرم تو انکاونٹر میں مارے جاتے ہیں ، لیکن زانیوں کے ساتھ ایسا نہیں ہوتا ، وہ صرف جیل جاتے ہیں ، یہ ہم سب کا فریضہ ہے کہ ہم بچوں کو اخلاقیات کا درس دیں۔

بی جے پی ممبر اسمبلی کا متنازع بیان ، بھگوان رام بھی آجائیں تو آبروریزی کے واقعات روکے نہیں جاسکتے

بی جے پی ممبر اسمبلی سریندر سنگھ ۔ فوٹو : اے این آئی۔

بی جے پی لیڈر نے مزید کہا کہ 15 سال تک بچوں اور بچیوں کی خصوصی نگرانی کی جانی چاہئے۔ اپنے بچوں کا تحفظ کرنا والدین کا فریضہ ہوتا ہے ، لیکن وہ اپنے فریضہ کی ادائیگی نہیں کررہے ہیں ، وہ جوان لڑکوں اور لڑکیوں کو اپنی مرضی کے مطابق رویہ اختیار کرنے کیلئے چھوڑ رہے ہیں ، یہ آبروریزی جیسی سماجی برائی کی اصل وجہ ہے۔

خیال رہے کہ یہ کوئی پہلا موقع نہیں ہے جب بی جے پی ممبر اسمبلی نے متنازع بیان دیا ہو ۔ پہلے بھی وہ کئی مرتبہ متنازع بیانات دے کر سرخیوں میں رہ چکے ہیں۔ اس سے پہلے سریندر سنگھ نے کہا تھا کہ سماج میں پیدا ہوئی آبروریزی جیسی برائی کیلئے ماں باپ ذمہ دار ہیں ، کیونکہ وہ اپنے بچوں اور بچیوں کی نگرانی نہیں کرتے ہیں۔