مغربی بنگال کے مالدہ پہنچتے ہی حراست میں لئے گئے بی جے پی لیڈر– News18 Urdu

مغربی بنگال کے مالدہ پہنچتے ہی حراست میں لئے گئے بی جے پی لیڈر

نئی دہلی۔ مغربی بنگال کے مالدہ میں كالياچک علاقے میں ہوئے تشدد معاملہ کی تحقیقات کے لئے مالدہ پہنچی 3 رکنی 'انکوائری ٹیم' کو آج صبح حراست میں لے لیا گیا۔

Jan 11, 2016 10:15 AM IST | Updated on: Jan 11, 2016 10:15 AM IST

نئی دہلی۔ مغربی بنگال کے مالدہ میں كالياچک علاقے میں ہوئے تشدد معاملہ کی تحقیقات کے لئے مالدہ پہنچی 3 رکنی 'انکوائری ٹیم' کو آج صبح حراست میں لے لیا گیا۔ ان میں دارجلنگ سے پارٹی رکن پارلیمنٹ ایس ایس اہلووالیہ، ریٹائرڈ ڈی جی پی وشنو دیال رام اور بی جے پی لیڈر بھوپندر یادو شامل ہیں۔ مالدہ ضلع پولیس نے انہیں ریلوے اسٹیشن سے ہی لوٹ جانے کو کہا اور كالياچک جانے سے روک دیا۔

بی جے پی کی اس ٹیم کو مالدہ اسٹیشن سے باہر بھی نہیں نکلنے دیا گیا۔ کہا گیا کہ باہر آنے یا کالیاچک جانے سے قانون وانتظام کی صورت حال بگڑ سکتی ہے۔ حراست میں لئے گئے ٹیم کے رکن ایس ایس اہلووالیہ نے کہا کہ ہم سچ جاننا چاہتے ہیں۔ بی جے پی نے اس اقدام پر کہا کہ ہمیں روکنا مطلب سچ کو چھپانا ہے۔ مالدہ ریلوے اسٹیشن پر ان تینوں کو وہاں پہنچنے کے چند منٹ بعد ہی حراست میں لے لیا گیا۔

مغربی بنگال کے مالدہ پہنچتے ہی حراست میں لئے گئے بی جے پی لیڈر

مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے ہفتہ کو کہا تھا کہ ریاست میں کوئی فرقہ وارانہ کشیدگی نہیں ہے۔ انہوں نے مالدہ ضلع کے كالياچک میں حال میں ہوئے واقعہ کو بی ایس ایف اور مقامی لوگوں کے درمیان جھگڑے کا نتیجہ بتایا۔ غور طلب ہے کہ مغربی بنگال میں اسی سال اسمبلی انتخابات ہونے ہیں۔