منی پور تشدد میں 8 افراد ہلاک، مرکز نے کہا حالات انتہائی کشیدہ– News18 Urdu

منی پور تشدد میں 8 افراد ہلاک، مرکز نے کہا حالات انتہائی کشیدہ

امپھال۔ منی پور کے چوڑاچندپور ضلع میں آتش زنی، تشدد اور جھڑپوں میں آٹھ افراد کے ہلاک اور 31 دیگر کے زخمی ہونے کی وجہ سے صورت حال کشیدہ ہے۔

Sep 02, 2015 08:08 AM IST | Updated on: Sep 02, 2015 08:08 AM IST

امپھال۔ منی پور کے چوڑاچندپور ضلع میں آتش زنی، تشدد اور جھڑپوں میں آٹھ افراد کے ہلاک اور 31 دیگر کے زخمی ہونے کی وجہ سے صورت حال کشیدہ ہے۔ واقعہ  کو نظر میں رکھتے ہوئے وہاں کرفیو بھی نافذ ہے۔ اسمبلی میں تین متنازعہ بل کے منظور ہونے کے پیش نظر تشدد بھڑک اٹھا۔ ان بلوں کی منظوری سے قبائلیوں میں غصہ آ گیا جنہیں ڈر ہے کہ زمین پر ان کے حقوق بیرونی لوگ چھین لیں گے۔

مرکز نے حالات کو انتہائی کشیدہ بتایا ہے اور مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ نے وزیر اعلی او ابوبی سنگھ کو یقین دلایا کہ ریاست کو تمام طرح کی مرکزی امداد دی جائے گی۔ وزیر مملکت برائے داخلی امور کرن رجيجو نے دہلی میں بتایا کہ منی پور میں حالات بہت کشیدہ ہیں۔ شورش زدہ علاقوں میں کرفیو لگا دیا گیا ہے۔ اگر ضرورت پڑی تو ہم قدم اٹھائیں گے۔

منی پور تشدد میں 8 افراد ہلاک، مرکز نے کہا حالات انتہائی کشیدہ

Loading...

مرکزی حکومت حالات سے نمٹنے میں پولیس کی مدد کے لئے ریاستی حکومت کی درخواست پر اضافی نیم فوجی دستے بھیجے گی۔ ذرائع نے بتایا کہ تین افراد اس وقت مارے گئے جب پولیس نے بھیڑ پر فائرنگ کی جس نے چوڑاچندپور تھانہ پر حملہ کر دیا تھا۔ ان کی موت کے ساتھ مرنے والوں کی تعداد بڑھ کر آٹھ ہو گئی ہے۔ پولیس فائرنگ میں چار افراد زخمی ہو گئے جس سے زخمیوں کی تعداد بڑھ کر 31 ہو گئی ہے۔ انہیں چوڑاچندپور ضلع ہسپتال میں داخل کرایا گیا ہے۔

بل کے منظور کئے جانے کے خلاف قبائلی طالب علم تنظیموں کے کئے گئے بند کے اعلان کے دوران پانچ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ پولیس کے مطابق منی پور کے ایک ایم پی، ریاست میں ایک وزیر اور پانچ ممبران اسمبلی  کے مکانات بند کے دوران جلا دیئے گئے تھے۔

 

 

 

Loading...