اسمرتی ایرانی پھر تنازع میں ، شوہر پر لگا اسکول کی زمین ہڑپنے کا الزام، ایس ڈی ایم کریں گے جانچ– News18 Urdu

اسمرتی ایرانی پھر تنازع میں ، شوہر پر لگا اسکول کی زمین ہڑپنے کا الزام، ایس ڈی ایم کریں گے جانچ

مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کے شوہر زوبن ایرانی پر غیر قانوی قبضہ کا الزام لگنے سے تنازعہ پیدا ہو گیا ہے۔

May 04, 2017 07:21 PM IST | Updated on: May 04, 2017 07:50 PM IST

عمريا: مدھیہ پردیش کے عمريا ضلع کے باندھوگڑھ ٹائیگر ریزرو کے قریب گاؤں كچواهي میں شاسکیہ پراتھم پاٹھشالہ کی زمین پر ٹیکسٹائلز کی مرکزی وزیر اسمرتی ایرانی کے شوہر زوبن ایرانی پر غیر قانوی قبضہ کا الزام لگنے سے تنازعہ پیدا ہو گیا ہے۔ تنازعہ کے درمیان اس کی جانچ مان پور کے سب ڈویژنل مجسٹریٹ (ایس ڈی ایم) جے پی یادو کو سونپی گئی ہے۔

مان پور تحصیل کے تحت گاؤں كچواهي کے پرائمری اسکول کے ہیڈ ماسٹر جانکی پرساد تیواری نے مارکیز ها سپیٹیلٹی ہیریٹیج کے ڈائریکٹر زوبن ایرانی پر الزام لگایا ہے کہ انہوں نے گاؤں كچواهي کے خسرہ نمبر 75 کی تقریبا پانچ ایکڑ زمین سال 2016 میں خریدی تھی۔ خریدی گئی زمین پر چہار دیواری بناتے وقت اس سے ملحقہ اسکول کی زمین پر بھی قبضہ کر لیا گیا ہے۔ اس کی شکایت انہوں نے سرپنچ اور اعلی افسران سے بھی ہے۔

اسمرتی ایرانی پھر تنازع میں ، شوہر پر لگا اسکول کی زمین ہڑپنے کا الزام، ایس ڈی ایم کریں گے جانچ

مسٹر تیواری نے مسٹر ایرانی کی طرف خریدی گئی زمین کو ہی غلط ٹھہرایا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ یہ زمین ہزاری بانی کے اچانک غائب ہونے کے بعد جيكرن بانی کے نام کی گئی تھی۔ ہزاری بانی کا کوئی وارث نہیں تھا اور جعل سازی کرکے اس زمین کو را م سمیر شکلا نے خرید کر سال 2016 میں مارکیز هاسپیٹلٹي هیریٹج کمپنی کے ڈائریکٹر کو فروخت کردی۔

بہرحال معاملہ ہائی پروفائل اور باندھوگڑھ سے متعلق ہونے کی وجہ سے شہ سرخیوں میں ہے۔ محترمہ ایرانی 30 اپریل کو باندھوگڑھ آئی تھیں اور متنازع مقام پر جاکر زمین کا معائنہ کیا تھا۔

Loading...