قومی سلامتی کے لئے آر ایس ایس خطرہ ، پابندی لگانے کیلئے ہائی کورٹ میں درخواست دائر

ہربند رکے مطابق اگر آر ایس ایس کو روکا نہیں گیا ، تو پنجاب کا بھی وہی حال ہوگا جو یوپی اور گجرات کا ہوا تھا ، کیونکہ آر ایس ایس صرف ہندو راشٹر کی بات کرتا ہے۔

Dec 24, 2016 03:45 PM IST | Updated on: Dec 24, 2016 03:45 PM IST
قومی سلامتی کے لئے آر ایس ایس خطرہ ، پابندی لگانے کیلئے ہائی کورٹ میں درخواست دائر

file photo

چندی گڑھ : پنجاب کے موہالی کے رہنے والے هربندر سنگھ ویدان نے ملک کی سلامتی کے لئے خطرہ قرار دیتے ہوئے پنجاب ہریانہ ہائی کورٹ میں آر ایس ایس اور اس سے وابستہ تنظیموں کے خلاف عرضی دائر کی ہے۔ ہربندر سنگھ نے اپنی عرضی میں آر ایس ایس پر الزام لگایا ہے کہ اس کے ایجنڈوں کی وجہ سے ہی پنجاب میں کسانوں کے ساتھ لوٹ مار ہو رہی ہے۔

کنسولڈیشن ایکٹ میں ترمیم کا معاملہ اٹھاتے ہوئے اس میں سیکشن 42 اے کو شامل کیا گیا ہے ، جو کہ آر ایس ایس کی ہی سوچ ہے اور بالکل غلط ہے۔ آر ایس ایس منو اسمرتی کے تصورات پر چلتا ہے ، جوکہ ملک میں کاسٹ نظام کی حمایت کرتا ہے۔ غور طلب ہے کہ جنہوں نے ہندوستان کا آئین بنایا تھا ، انہوں نے اسے ملک کے لئے خطرہ سمجھتے ہوئے اسے آئین میں جگہ نہیں دی تھی۔

ہندی سیاست ڈاٹ کام کی خبر کے مطابق ہربندر نے اپنی عرضی میں آر ایس ایس کو ملک کے لئے خطرہ قرار دیتے ہوئے اس پر پابندی عائد کئے جانے کا مطالبہ کیا ہے۔ہربند رکے مطابق اگر آر ایس ایس کو روکا نہیں گیا ، تو پنجاب کا بھی وہی حال ہوگا جو یوپی اور گجرات کا ہوا تھا ، کیونکہ آر ایس ایس صرف ہندو راشٹر کی بات کرتا ہے۔ عرضی کا جایزہ لینے کے لئے ہائی کورٹ نے سماعت کو 17 جنوری تک کیلئے ملتوی کردیا ہے۔

Loading...

Loading...