fir against army for beating up sdm and four others on poll duty in jammu kashmir ns– News18 Urdu

جموں وکشمیر: فوج کےجوانوں نےایس ڈی ایم سمیت 5 الیکشن افسران کوپیٹا، ایف آئی آردرج

جموں وکشمیر میں الیکشن ڈیوٹی پرتعینات ایس ڈی ایم نے الزام لگایا کہ جب انہوں نے اننت ناگ کے ڈپٹی  پولیس کمشنر کوکال کرنے کی کوشش کی توجوانوں نے ان کا اوران کے ڈرائیورکا فون بھی چھین لیا۔

Apr 17, 2019 06:20 PM IST | Updated on: Apr 17, 2019 06:25 PM IST

فوج کےجوانوں کےخلاف جنوبی کشمیرکےقاضی گنڈ میں الیکشن ڈیوٹی پرتعینات ایس ڈی ایم کےساتھ مارپیٹ کےالزام میں ایف آئی آردرج کی گئی ہے۔ مجسٹریٹ سطح کے افسران کی شکایت پررنویرپینل کوڈ (آرپی سی) کی دفعہ 323 اور341 کےتحت جوانوں کےخلاف بدھ کومعاملہ درج کرلیا گیا ہے۔

ڈوروایس ڈی ایم غلام رسول وانی نےمنگل کوبتایا کہ وہ کچھ افسران کےساتھ قاضی گنڈ کے اجرومیں ایک انتخابی میٹنگ میں شامل ہونےکےلئےجارہےتھے۔ اسی دوران فوج کےکچھ جوانوں نےان کےاورچاردیگرافسران کےساتھ بدسلوکی کی۔ انہوں نے سرکاری گاڑی کو نقصان پہنچانےکےساتھ ہی ڈرائیورکی بھی پٹائی کی۔ غلام وانی کی طرف سے فوج کے خلاف دی گئی تحریری شکایت میں کہا گیا ہے کہ جب انہوں نےڈرائیورکوبچانے کی کوشش کی توانہیں بھی کالرپکڑکرگھسیٹا گیا، پیرسےمارا گیا اورگالیاں دی گئیں۔

جموں وکشمیر: فوج کےجوانوں نےایس ڈی ایم سمیت 5 الیکشن افسران کوپیٹا، ایف آئی آردرج

علامتی تصویر

شکایت کے مطابق فوج کے جوانوں نےاپنے ہتھیاروں کے سیفٹی لاک کھول کربندوقیں ان پرتان دیں۔ جوانوں نےانہیں جان سے مارنے کی دھمکی بھی دی۔ انہیں اننت ناگ کے پولیس ڈپٹی کمشنرکے پہنچنے کےبعد ہی چھوڑا گیا۔ انہوں نے شکایت میں سیکورٹی اہلکاروں کے خلاف مارپیٹ، افسران کے خلاف تشدد اورسرکاری کام میں رخنہ اندازی کرنے کی دفعات میں ایف آئی آردرج کرنےکی گہارلگائی۔ وانی نے یہ الزام بھی عائد کیا کہ جب انہوں نے اننت ناگ کے پولیس ڈپٹی کمشنرکوکال کرنےکی کوشش کی توجوانوں نے ان کا اوران کے ڈرائیورکا فون چھین لیا۔

حادثہ اس وقت ہوا جب فوج نے ہائی وے پرعام لوگوں کےلئے راستہ بند کردیا تھا۔ وانی نے کہا کہ جوان کسی بھی عام شہری کی گاڑی کوہائی وے پرنہیں جانے دے رہے تھے، جب میں نے اپنا تعارف کرایا تو ہمیں ہائی وے پرجانے دیا گیا۔ کچھ دوری پرآرمی کی ایک اورپارٹی کھڑی تھی، جنہوں نےہمارے ساتھ مارپیٹ کی۔ واضح رہےکہ کشمیرمیں عام شہریوں کے لئے ہراتواراوربدھ کوہائی وے پرداخلے کی اجازت نہیں ہوتی ہے۔ دونوں دن صرف فوج ہائی وے کا استعمال کرسکتی ہے۔ حادثہ کےدن ہائی وےعام شہریوں کےلئےبند نہیں تھا، لیکن فوج کےموومنٹ کے سبب لوگوں کوروکا گیا تھا۔

کشمیرایڈمنسٹریٹیوسروس اتھارٹی آرگنائزیشن (کشمیرانتظامی خدمات اتھارٹی تنظیم) نے حادثہ کی سخت مذمت کرتے ہوئےاعلیٰ افسران کےسامنے معاملہ اٹھایا ہے۔ تنظیم نےبتایا کہ ہم نےاعلیٰ افسران کوپورے معاملے کی اطلاع دے دی ہے۔ ساتھ ہی معاملے کی فوری تفتیش کرکےقصورواروں پرسخت کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ فوج نےابھی تک کوئی بیان جاری نہیں کیا ہے، لیکن سری نگرمیں ایک ترجمان نےبتایا کہ معاملےکی جانچ کی جارہی ہے۔