پلوامہ کے بعد پاکستان نےکی تھی ایک اوربڑی غلطی، حملہ کرنے والی تھی ہندوستانی بحریہ، پھرہوا ایسا– News18 Urdu

پلوامہ کے بعد پاکستان نےکی تھی ایک اوربڑی غلطی، حملہ کرنے والی تھی ہندوستانی بحریہ، پھرہوا ایسا

ہندوستانی فوج نےپلوامہ میں سی آرپی ایف کے قافلے پرہوئے دہشت گردانہ حملے کا بالا کوٹ میں ایئراسٹرائیک کےذریعہ جواب دیا تھا۔ وہیں ہندوستانی بحریہ نے پاکستان کوسمندرکے راستے بھی حملےکا جواب دینےکےلئے منصوبہ بندی کی تھی۔

Jun 23, 2019 05:34 PM IST | Updated on: Jun 23, 2019 05:34 PM IST

ہندوستانی فوج نے پلوامہ میں سی آرپی ایف کے قافلے پرہوئے دہشت گردانہ حملے کا بالا کوٹ میں ایئراسٹرائیک کےذریعہ زبردست جواب دیا تھا۔ اتنا ہی نہیں ہندوستانی بحریہ نے پاکستان کوسمندرکےراستے بھی حملے کا جواب دینے کےلئے منصوبہ بندی کرلی تھی۔ پلوامہ حملہ کےفوراً بعد ہندوستانی فوج نے بحریہ کوپریکٹس سےہٹا کرنیوکلیئرپنڈبیوں سمیت کئی آ بد وزسر نگ کوپاکستانی آبی سرحد پرتعینات کردیا تھا۔

اس کی وجہ پاکستان کی ایک ہوشیاری تھی، جس کی سزاسے بھگتنی پڑتی، اگرہندوستان نے اسے پکڑنہ لیا ہوتا۔ ہندوستانی بحریہ کی یہ تعیناتی اورجارحانہ تیوردیکھ کرپاکستان خوفزدہ ہوگیا تھا کہ ہندوستانی بحریہ کی طرف سے کبھی بھی کارروائی کا حکم دیا جاسکتا ہے۔ دراصل اس کی وجہ تھی: پاکستان کی ایک اور حرکت۔ اس نے چالاکی سے اپنی سب سے ایڈوانس اگوسٹا کلاس  آ بد وزسر نگ  پی این ایس ساد کواپنے آبی علاقے سےغائب کردیا تھا۔

پلوامہ کے بعد پاکستان نےکی تھی ایک اوربڑی غلطی، حملہ کرنے والی تھی ہندوستانی بحریہ، پھرہوا ایسا

ہندوستان، عرب سمندر میں پاکستان کی ہرسرگرمی پرنظررکھتا ہے۔ (علامتی تصویر)۔

طویل وقت تک پانی کےنیچے رہنے کی صلاحیت والی اس سبمرین کےغائب ہونے کے سبب ہندوستانی بحریہ کوفکرہورہی تھی کہ کہیں اس آ بد وزسر نگ  کوپاکستان، ہندوستان بھیجنے کی فراق میں نہ ہو۔ اس لئے ہندوستان نے اپنےکسی بھی نقصان کی حالت میں پاکستان کو پورا ہرجانہ ادا کرنے کا خوف دکھاتے ہوئے بہت بڑی ٹیم پاکستانی سرحد پرتعینات کردی تھی۔ ساتھ ہی ہندوستان نےاس پنڈبی کی تلاش میں ایک آپریشن بھی لانچ کیا۔

ہندوستان نے 21 دنوں بعد نکالی پنڈبی

ذرائع نے بتایا کہ یہ پنڈبی کراچی کے پاس سےغائب ہوئی تھی اوراگریہ پانی کےاندرمسلسل چلےتویہ تین دنوں کےاندرگجرات کی ساحل پرپہنچ سکتی تھی۔ اس کےعلاوہ پانچ دن میں یہ مغربی فلیٹ کے ہیڈ کوارٹرپہنچ سکتی تھی۔ یہ ہندوستان کےلئے بڑے خطرے کی بات ہو سکتی تھی۔ ہندوستانی بحریہ نے جم کراس کی تلاش کی۔ آخرکاروہ 21 دن تلاش کرنے کے بعد پاکستان کے مغربی حصے میں ملی۔

Loading...