jammu kashmir kathua gang rape and murder case story snm کٹھوعہ عصمت دری و قتل کیس: جانیں کب کیا ہوا؟– News18 Urdu

کٹھوعہ عصمت دری و قتل کیس: جانیں کب کیا ہوا؟

Jun 10, 2019 06:04 PM IST | Updated on: Jun 10, 2019 06:04 PM IST

جہاں آج کٹھوعہ ریپ کیس میں کورٹ نے مجرموں کیلئے سزا کا اعلان کردیا ہے۔ کورٹ نے تین مجرموں کو عمر قید کی سزا سنائی ہے۔جموں۔کشمیر کے کٹھوعہ میں 8 سال کی بچی کے ریپ اور قتل کے معاملے میں پٹھان کوٹ کی خصوصی عدالت نے کل 7 ملزموں میں سے 6 کو مجرم قرار دیا ہے۔  ان میں سے تین مجرموں کو عمر قید کی سزا سنائی گئی ہے۔ وہیں کٹھوعہ عصمت دری و قتل معاملہ بعض سیاسی جماعتوں کے لیڈران کی طرف سے ملزمان کو بچانے کی کوششوں، 'ہندو ایکتا منچ' نامی تنظیم کی طرف سے ملزمان کے حق میں ترنگا بردار جلوس برآمد کرنے، کٹھوعہ میں وکلاء کی جانب سے کرائم برانچ کو ملزمان کے خلاف چارج شیٹ دائر کرنے سے روکنے اور متاثرہ کنبے کے سماجی بائیکاٹ کے سبب عالمی سطح پر خبروں میں رہا۔ جانیں اس معاملے میں کب کیا ہوا؟

12 جنوری 2018ء کو صوبہ جموں کے ہندو اکثریتی ضلع کٹھوعہ کے رسانہ نامی گائوں سے تعلق رکھنے والے محمد یوسف پجوال شکایت لیکر پولیس تھانہ ہیرا نگر پہنچے۔ محمد یوسف جن کا تعلق گجر بکروال طبقے سے ہے، نے اپنی شکایت میں کہا کہ اُن کی آٹھ سالہ بیٹی 10 جنوری 2018ء کو گھوڑے چرانے کے لئے نزدیکی جنگل گئی، شام کے چار بجے گھوڑے واپس لوٹے لیکن لڑکی واپس نہ لوٹی۔ پولیس تھانہ ہیرا نگر نے شکایت پر ایف آئی آر درج کرکے تحقیقات شروع کردی۔

کٹھوعہ عصمت دری و قتل کیس: جانیں کب کیا ہوا؟

17 جنوری 2018ء کو کمسن بچی کی لاش نزدیکی جنگل میں جھاڑیوں سے برآمد کی گئی۔ پولیس نے بچی کی لاش اپنے تحویل میں لی اور ضلع ہسپتال کٹھوعہ میں پوسٹ مارٹم کے بعد آخری رسومات کی ادائیگی کے لئے لواحقین کے حوالے کی گئی۔ جب مقتولہ بچی کے لئے رسانہ میں قبر کھودنا شروع کی گئی تو وہاں اکثریتی طبقے سے تعلق رکھنے والے افراد نے مخالفت کی جس کے بعد بچی کو قریب دس کلو میٹر دور ایک گائوں میں دفنایا گیا۔تحقیقات کے دوران پولیس تھانہ ہیرا نگر نے عصمت دری و قتل واقعہ کے منصوبہ ساز سانجی رام کے نابالغ بھتیجے کو پوچھ گچھ کے لئے حراست میں لیا۔ پوچھ گچھ کے دوران نابالغ ملزم نے انکشاف کیا کہ وہ شراب، سگریٹ اور دیگر نشہ آور چیزوں کا عادی ہے اور اسکول سے اس وجہ سے نکالا جاچکا ہے کیونکہ وہ لڑکیوں کے ساتھ بدتمیزی کرتا تھا۔

Loading...

Loading...