کاسگنج تشدد پر سیاست تیز: وشو ہندو پریشد، بجرنگ دل نے نکالی ترنگا یاترا– News18 Urdu

کاسگنج تشدد پر سیاست تیز: وشو ہندو پریشد، بجرنگ دل نے نکالی ترنگا یاترا

کاسگنج میں ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کے بعد یہ معاملہ ٹھنڈا ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے۔ اس بیچ وشو ہندو پریشد کی طرف سے آگرہ میں ترنگا یاترا کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔

Jan 31, 2018 12:58 PM IST | Updated on: Jan 31, 2018 12:58 PM IST

آگرہ۔ کاسگنج میں ہوئے فرقہ وارانہ تشدد کے بعد یہ معاملہ ٹھنڈا ہوتا نظر نہیں آ رہا ہے۔ اس بیچ وشو ہندو پریشد کی طرف سے آگرہ میں ترنگا یاترا کا اہتمام کیا جا رہا ہے۔ منگل کو امیٹھی اور لکھنؤ میں احتجاجی مظاہرہ کے بعد بدھ کو آگرہ اور فیروز آباد میں اسی طرح کے مظاہرے دیکھنے کو ملے۔

آگرہ میں وشو ہندو پریشد کے کارکنان سڑک پر اترے، وہیں فیروزآباد میں بجرنگ دل نے احتجاجی مظاہرہ کی کمان سنبھالی۔ دریں اثنا، فیروزآباد میں پولیس نے اجازت کے بغیر مظاہرہ پر پابندی عائد کردی، وہیں، آگرہ میں مظاہرہ کے دوران بڑی تعداد میں فورسز نے سیکورٹی انتظامات کی ذمہ داری سنبھالی۔

کاسگنج تشدد پر سیاست تیز: وشو ہندو پریشد، بجرنگ دل نے نکالی ترنگا یاترا

آگرہ میں وشو ہندو پریشد کے کارکنان سڑک پر اترے، وہیں فیروزآباد میں بجرنگ دل نے احتجاجی مظاہرہ کی کمان سنبھالی۔

Loading...

وشو ہندو پریشد نے آگرہ میں ترنگا یاترا نکالی۔ یاترا کے دوران جے شری رام اور وندے ماترم کے نعرے بھی لگے۔ آگرہ میں بڑی تعداد میں پولیس فورس تعینات رہی۔  وہیں، ترنگا یاترا پر بی جے پی کے راجیہ سبھا رکن پارلیمنٹ ونے کٹیار نے کہا کہ"مجھے نہیں لگتا کہ یہ ترنگا یاترا کے لئے صحیح وقت ہے۔

Loading...