رمضان کے وقت الیکشن کروایا جا رہا ہے تاکہ اقلیتیں ووٹ نہ ڈال سکیں: ٹی ایم سی لیڈر

لوک سبھا انتخابات کی تاریخوں کا اعلان ہوتے ہی سیاسی پارٹیاں طرح- طرح کی بیان بازی کرنے لگی ہیں۔

Mar 11, 2019 09:17 AM IST | Updated on: Mar 11, 2019 09:30 AM IST

لوک سبھا انتخابات کی تاریخوں کا اعلان ہوتے ہی سیاسی پارٹیاں طرح- طرح کی بیان بازی کرنے لگی ہیں۔ دریں اثنا  ترنمول کانگریس لیڈر اور کولکاتہ میونسپل کارپوریشن کے میئر فرہد حکیم نے کہا کہ الیکشن کمیشن نے رمضان کے وقت الیکشن کی تاریخیں رکھی ہیں تاکہ اقلیتیں  ووٹ نہ ڈال سکیں۔ انہوں نے کہا کہ رمضان میں الیکشن ہونے کی وجہ سےلوگوں کو ووٹ ڈالنے میں پریشانی ہوگی۔

یہ پہلی مرتبہ نہیں ہے  کہ ٹی ایم سی لیڈر رمضان کا معاملہ اٹھا رہے ہیں۔ گزشتہ پنچایت انتخابات کے دوران بھی ٹی ایم سی لیڈر اور وزیر پارتھ چٹرجی نے مغربی بنگال کے الیکشن کمیشنر سے مل کر کہا تھا کہ الیکشن رمضان کے پہلے کروا لیا جائے۔

رمضان کے وقت الیکشن کروایا جا رہا ہے تاکہ اقلیتیں ووٹ نہ ڈال سکیں: ٹی ایم سی لیڈر

فائل تصویر

Loading...

قابل غور ہے کہ مغربی بنگال میں 31 فیصدی مسلمان ووٹر ہیں۔ الیکشن کمیشن کے اعلان کے مطابق مغربی بنگال میں سات مرحلوں میں الیکشن ہوں گے۔ اسی بیچ 5 مئی سے 4 جون تک رمضان پڑ رہے ہیں۔ کانگریس نے بھی اس کی حمایت کی ہے۔ مغربی بنگال کے کانگریس چیف سومیندر ناتھ مترا نے کہا کہ پول پینل کو اس معاملہ پر غور کرنا چاہئے۔

 

 

Loading...