فرقہ پرست طاقتیں ملک کی جمہوریت کو برباد کرنے کے درپے:مولانا اسرارالحق قاسمی– News18 Urdu

فرقہ پرست طاقتیں ملک کی جمہوریت کو برباد کرنے کے درپے:مولانا اسرارالحق قاسمی

ہندوستان کی آزادی کی تحریک میں مسلمانوں نے دیگر برادران وطن کے ساتھ بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور ہر محاذ پر انہوں نے اپنے جان و مال کی قربانی پیش کی جس کے نتیجہ میں آج ہم ایک آزاد ملک میں ہر قسم کی سہولت و جمہوریت کے ساتھ زندگی گزاررہے ہیں

Jan 22, 2018 05:47 PM IST | Updated on: Jan 22, 2018 05:47 PM IST

کشن گنج: ہندوستان کی آزادی کی تحریک میں مسلمانوں نے دیگر برادران وطن کے ساتھ بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور ہر محاذ پر انہوں نے اپنے جان و مال کی قربانی پیش کی جس کے نتیجہ میں آج ہم ایک آزاد ملک میں ہر قسم کی سہولت و جمہوریت کے ساتھ زندگی گزاررہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار معروف عالم دین وممبر پارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے پوٹھیابلاک کے ہلداگاؤں میں1 کروڑ72 لاکھ کے بجٹ سے تعمیر ہونے والے پل کے افتتاح کے موقعے پر منعقدہ ایک عوامی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

انہوں نے کہا کہ آزادی کے بعد ہمارے ملک کے رہنماؤں نے اس ملک کا ایک جمہوری دستور بنایا جس کے تحت ہندوستان کے تمام طبقات کو یہ حق دیا گیا کہ وہ اپنے مذہب اور مذہبی تعلیمات پر عمل کرتے ہوئے اس ملک میں رہیں اور اس کی ترقی و خوشحالی میں اپنا رول اداکریں،مگر افسوس کی بات ہے کہ فرقہ پرست عناصر پر مشتمل ایک طبقہ ہمیشہ اس نظریہ اور ملک کے دستور کے خلاف رہا اور اس نے ہمیشہ ملک کے سیکولر تانابانا کو نقصان پہنچانے کی کوشش کی ہے،آج یہی طبقہ ملک میں برسر اقتدار ہے اور عوام کے درمیان نفرت و دشمنی کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

فرقہ پرست طاقتیں ملک کی جمہوریت کو برباد کرنے کے درپے:مولانا اسرارالحق قاسمی

مولانا اسرارالحق قاسمی۔ فائل فوٹو

مولانا قاسمی نے کہا کہ اس وقت ہندوستان کے تمام شہریوں کوملک کی جمہوری روح کے تحفظ کے لئے پوری قوت کے ساتھ آگے آنے اوران طاقتوں کا مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے جو ملک کے شہریوں کے درمیان نفرت و عداوت کی لکیر کھینچنا چاہتے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی گنگا جمنی تہذیب اور مشترکہ اقدار کے تحفظ کے لئے ہندواور مسلمان سبھی کو ایک ساتھ مل کر محنت کرنے کی ضرورت ہے۔مولانانے ملک کے مسلمانوں کے مسائل و ضروریات پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس وقت مسلمانوں میں باہمی اتحاد و اتفاق کا قیام اور تعلیمی بیداری کاکام کرنا وقت کا ایک اہم ترین تقاضا ہے،جب تک ہمارے درمیان باہمی اتحاد و اتفاق کا جذبہ نہیں پیدا ہوگااس اس وقت ہم دشمنوں کی سازشوں کا شکار ہوتے رہیں گے اور قدم قدم پر ناکامیوں کا سامنا کرنا پڑے گا۔ جبکہ تعلیم ہی اصلاح معاشرہ کی کلید اور کنجی ہے لہذا مساجد کے منبر و محراب سے بھی قوم میں تعلیمی بیداری کاکام کرنا ہوگا اور مدارس اور تعلیم گاہوں کے ذریعے سے بھی۔

Loading...

انہوں نے کہاکہ والدین اگراپنے بچوں کے ذریعہ تعلیم کا پودا لگائیں گے تویہی آگے چل کر اعلی تعلیمات سے فیضیاب ہوں گے اور ملک و ملت کے لئے ثمرآور ثابت ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ دین کی سمجھ بھی صحیح علم پر موقوف ہے اور معاشرہ میں پائے جانے والے بگاڑ کو دور کرنے کا واحد ذریعہ یہ ہے کہ مسلمان اللہ کی رسی یعنی قرآن و سنتِ رسول اللہ کو مضبوطی سے تھام لیں ،لہذا ہمیں ہر قیمت پر اپنی نئی نسل کو تعلیم یافتہ بنانے اور اس کے ساتھ ان کی صالح تربیت کی کوشش کرنی ہوگی ۔

Loading...