چندریان -2 مشن کے پیچھے ہیں دوخواتین، جانیں کون ہیں راکٹ وویمن اورڈیٹا کوئن– News18 Urdu

چندریان -2 مشن کے پیچھے ہیں دوخواتین، جانیں کون ہیں راکٹ وویمن اورڈیٹا کوئن

اسرواورہندوستان کے اسپیس کارکنان کی تاریخ میں یہ پہلی بارہورہی ہے کہ اتنے اہم مشن کے پیچھے اہم رول میں دو خواتین ہیں۔ جانیں یہ دو خاص چہرے کون ہیں اورکیوں یاد رکھنے کے لائق ہیں۔

Jul 14, 2019 03:04 PM IST | Updated on: Jul 14, 2019 03:06 PM IST

آندھرا پردیش کے شری ہری کوٹہ میں واقعہ ستیش دھون اسپیس ریسرچ سینٹرسے 15 جولائی کی علی الصبح 2:51 بجے ہندوستان کا چندریان 2 مشن لانچ ہوگا، جسے اسرو کے سائنسدانوں کا انتہائی اہم مشن مانا جارہا ہے۔ اسرواورہندوستان کے اسپیس پروگراموں کی تاریخ میں یہ پہلی بارہورہا ہے کہ اتنے اہم مشن کے پیچھے اہم رول میں دوخواتین ہیں۔ متھیا ونیتا پروجیکٹ ڈائریکٹرکے طورپرتوریتوکاریدھال مشن ڈائریکٹرکے طورپراس مشن کی ریڑھ رہی ہیں۔ آئیے جانیں یہ دوچہرے کون ہیں اورکیوں یاد رکھنے کے لائق ہیں۔

چندریان -2 مشن کے پیچھے ہیں دوخواتین، جانیں کون ہیں راکٹ وویمن اورڈیٹا کوئن

اسرو کی تاریخ میں پہلی بارمشن کی سربراہ دو خواتین ہیں۔

بیسٹ سائنٹسٹ متھیا ونیتا ہیں ڈیٹا کین 

چندریان 2 مشن کی پروجیکٹ ڈائریکٹرونیتا کو 2006 میں سب سے بہترین خاتون سائنس کےایوارڈ سے نوازا جاچکا ہے۔ اسروکی تاریخ میں کسی پروجیکٹ کی سربراہ بننے والی پہلی خاتون کا فخرحاصل کرنےوالی ونیتا کواس مشن کی سربراہ ہونے کے ساتھ حاصل ہوا ہے۔ اس سےپہلے ونیتا کارٹوسیٹ -1، اوشین سیٹ-2 اورمیگھ ٹراپکس مصنوعی سیاروں کےمشن سے جڑے ڈیٹا سسٹم کے لئے پروجیکٹ کی جوائنٹ ڈائریکٹررہ چکی ہیں۔

ونیتا کوڈیٹا کوئن مانا جاتا ہے کیونکہ یہ ان کی خصوصی صلاحیت کا علاقہ ہے۔ چندریان -1 مشن کے پروجیکٹ ڈائریکٹر رہ چکے ڈاکٹرایم انادرئی نے ہی ونیتا کوچندریان 2 مشن کی ذمہ داری لینے کی حوصلہ افزائی کی تھی۔ نیوز 18 سے خاص بات چیت میں انادرئی نے کہا 'ونیتا ڈیٹا ہینڈل کرنے میں ماہرہیں۔ ڈیجٹیل / ہارڈ ویئرعلاقے میں ونیتا بے حد ہنرمند محسوس کرتی تھیں، لیکن اس پروجیکٹ کے ڈائریکٹرکے طورپرکام کرنے میں انہیں ہچک تھی'۔

نیوز 18 کو انادرئی نے یہ بھی بتایا کہ اس رول کو نبھانے کے لئے جی توڑمحنت کرنی ہوتی ہے، کیونکہ آپ روز18 گھنٹے تک کام کرتے ہیں اورذاتی زندگی ایک طرح سے قربان کرتے ہیں۔ بدلے میں آپ کوپورے ملک میں پہچان ملتی ہے اوربڑی ذمہ داریاں اپنے آپ میں آپ کوایک پہچان دلاتی ہیں۔

منگل کے بعد چاند تک ریتو ہیں راکٹ وویمن

چندریان 2 مشن کی ڈائریکٹررہنے سے پہلے ریتو2013 میں ہندوستان کے انتہائی اہم منگل مشن میں بطورسائنسداں کام کرچکی تھیں۔ یہ مشن بے حد کامیاب رہا تھا اورہندوستان چوتھا ملک بنا تھا، جس نے منگل تک پہنچنے میں کامیابی حاصل کی تھی۔ اس وقت ریتونے منگل مشن میں سیٹلائٹ کے آپریشن کو لے کررول ادا کیا تھا۔ ریتو کی ہنرمندی کو پہچانا گیا اوراس بارانہیں بڑی ذمہ داری دی گئی۔

ریتوبچپن سے ہی اپنے ہدف کو لے کرپراعتماد تھیں اورانہیں ہمیشہ سے خلا میں دلچسپی تھی۔ وہ بچپن کی تعلیم کے دوران ناسا اوراسرو کی تمام خبروں کی کٹنگ اپنے پاس رکھا کرتی تھیں۔ لکھنو سے فزکس میں ماسٹرس کی ڈگری لینے کے بعد ریتونے بنگلورواقع  انڈین انسٹی آف سائنس سے ایم ٹیک کیا۔ وہ اپنے ذاتی زندگی میں عام اورروایتی ہندوستانی خاتون کی شبیہ رکھتی ہیں۔

اپنے چھوٹی بھائی بہنوں اوراپنے دو بچوں کی ذمہ داری پوری طرح سے اٹھانے والی ریتو ذاتی زندگی میں جتنی سادگی بھری رہی ہیں، کام کرنے کی زندگی میں اتنا ہی پروفیشنل اور مہارت سے انہوں نے اپنی ذمہ داریاں نبھائی ہیں۔ خلائی سائنس میں ان کی مہارت کے سبب ہی انہیں اسرواورخلائی سائنس کی دنیا میں ہندوستان کی 'راکٹ وویمن' کے نام سے جانا جاتا ہے۔ 1997 میں ریتو نے اسرو کے ساتھ اپنا سفرشروع کیا تھا اورانہیں سابق صدرجمہوریہ اورمعرف سائنسداں اے پی جے عبدالکلام کے ہاتھوں اعزازسے بھی سرفرازکیا جاچکا ہے۔ٓ

 

Loading...