میرٹھ: اقلیتوں کے ساتھ امتیازی سلوک کرنے کا مقامی لوگوں نے سرکاری محکموں پرلگایا الزام

Jul 17, 2019 09:56 AM IST | Updated on: Jul 17, 2019 09:56 AM IST
میرٹھ: اقلیتوں کے ساتھ امتیازی سلوک کرنے کا مقامی لوگوں نے سرکاری محکموں پرلگایا الزام

میرٹھ کے ذاکرنگر ، تارا پوری لساڑی روڈ، فتح الله پور، اسلام آباد ، قدوائی نگر ، رشید نگر ، مجید نگر اقلیتی آبادی والے پچھڑے علاقوں کو بسے ہوئے ایک مدّت گزر گئی۔ لیکن گزشتہ بیس برسوں میں بھی ان علاقوں کے حالات نہیں بدلے ۔جگہ جگہ ٹوٹی سڑکیں ، لائٹ اور پانی کی بدتر سپلائی ان علاقوں میں رہنے والوں کی قسمت بن گئی ہے ۔ تمام شکایتوں کے باوجود سرکاری عملے کی لاپرواہی اور دوہرے رویہ سے ان علا قوں میں رہنے والے لوگ پریشان ہیں ۔

برسات کے اس موسم میں اب نگر نگم کی نیند ٹوٹی ہے تو سرکاری عملے نے نالوں کی صفائی تو شروع کی ہے لیکن نالوں سے نکلے کچرے اور غلاظت کو سڑک پر پھیلا کر مقامی لوگوں کے لئے مزید پریشانی پیدا کر دی ہے ۔وہیں کانوڑ یاترا اور عید الاضحی کے پیش نظر شہر میں صاف صفائی کو لیکر سماجی کارکنان بھی نگر نگم کے چکّر لگا رہے ہیں ۔ آپ بھی دیکھئے نیوز18 اردو کے لیے میرٹھ سے تنظیر انصار کی یہ رپورٹ

Loading...

وہیں متعلقہ محکموں کے ذمہ دار افسران نگر نگم کی بدنظمی پر پردہ ڈالنے کی کوشش کرتے ہی نظر آتے ہیں۔نگر نگم حلقے میں آنے والے ہر ایک علاقے میں لائٹ، پانی اور صاف صفائی کی ذمہ داری متعلقہ سرکاری محکموں کی ہوتی ہے لیکن ذمہ داری کی ادائیگی کا دائر ہ اگر شہر کے کچھ علاقوں تک ہی محدود ہو تو ان محکموں کی کارکردگی پر سوال اٹھنا لازمی ہے۔

Loading...