mob attacks on muslim family by sticks rod at house video shows women pleading for help in gurugram– News18 Urdu

مسلم فیملی کوگھرمیں گھس کرلاٹھی، راڈ سےپیٹا گیا، جان بچانےکی گہارلگاتی رہیں خواتین

متاثرہ فیملی کا کہنا ہےکہ یہ منصوبہ بند طریقے سے کیا گیا حملہ تھا۔  ساتھ یہ بھی دعویٰ کیا کہ حملہ آوروں کوایک ہندتوا تنظیم کی حمایت حاصل تھی۔

Mar 23, 2019 09:29 AM IST | Updated on: Mar 25, 2019 12:15 PM IST

گروگرام کے بھونڈسی علاقے میں تقریباً 40 لوگوں کا گروپ ایک مسلم فیملی کےگھرمیں گھس گیا اورفیملی کے افراد کو راڈ، ہاکی اوراسٹک سے بے رحمی سے پیٹنےلگا۔ وہیں کچھ لوگ گھرپرپتھربازی کرنے لگے۔ یہ حادثہ جمعرات کا بتایا جارہا ہے۔

پولیس کا کہنا ہےکہ دونوں فریق کے درمیان ہولی کے دوران کرکٹ میچ کولےکرجھڑپ شروع ہوئی تھی۔ وہیں متاثرہ اہل خانہ کا کہنا ہےکہ یہ منصوبہ بند طریقے سے کیا گیا حملہ تھا۔ اہل خانہ نےدعویٰ کیا کہ حملہ آوروں کوایک ہندتوا گروپ کی حمایت حاصل تھی۔ پولیس نے اس معاملے میں 6 لوگوں کوگرفتارکیا ہے۔ سبھی کوقتل کرنے کی کوشش کا ملزم بنایا گیا ہے۔

مسلم فیملی کوگھرمیں گھس کرلاٹھی، راڈ سےپیٹا گیا، جان بچانےکی گہارلگاتی رہیں خواتین

وائرل ویڈیو کا اسکرین شاٹ

Loading...

حادثہ کا ویڈیو سوشل میڈیا پروائرل ہوگیا ہے، جس میں نظرآرہا ہے کہ 10 لوگ گھرکے برآمدے میں فیملی کے مردوں کولاٹھی ڈنڈوں اورراڈ سے پیٹ رہے ہیں۔ وہیں خواتین انہیں چھوڑنے کی گہارلگاتی نظرآرہی ہیں۔ ان کے رونے کی آوازویڈیومیں سنی جاسکتی ہے۔ ویڈیومیں ایک شخص کےسرسے خون نکلتا نظرآرہا ہے۔ اس کے باوجود لوگ اسے بے ہوش ہونے تک پیٹتے رہے۔ وہیں ویڈیومیں ایک مرد کونے میں بے جان پڑا نظرآرہا ہے، اس کے باوجود بھیڑاسے پیٹتےہوئےنظرآرہی ہے۔

پولیس کےمطابق شاہد نام کے ایک متاثرہ نے بیان دیا ہے کہ نشے میں مدہوش تقریباً چھ، سات لوگوں نے اس کے گھرکے لوگوں سے کہا کہ وہ سڑک پرکرکٹ نہ کھیلیں، اس کےبعد تقریباً 40 لوگ شرابیوں کےساتھ جمع ہوگئےاورپھرفیملی پرراڈ، ہاکی اسٹک، پائپ وغیرہ سے حملہ کردیا۔

خودکوبچانےکی کوشش میں متاثرہ فیملی کےلوگوں کےافراد اپنےگھرمیں گھس گئے، لیکن کچھ حملہ آورگھرمیں زبردستی گھس گئےاورانہیں پیٹنے لگے، جولوگ اندرنہیں گھس سکے، وہ گھرپرپتھربرسانے لگے۔ متاثرہ فیملی نےالزام لگایا کہ ہیلپ لائن نمبرپرکال کرتے رہے، لیکن پولیس شکایت کے تقریباً 40 منٹ بعد جائے حادثہ پرپہنچی۔ جب تک پولیس پہنچی، تب تک حملہ آورفرارہوچکے تھے۔ پولیس نے بتایا 'ہم نے قتل کی کوشش اوردیگر دفعات کے تحت معاملہ درج کرلیا ہے۔ ہم نے ابھی تک 6 لوگوں کوگرفتارکیا ہے اورویڈیو کی بنیاد پردیگرحملہ آوروں کی شناخت کرنے کی کوشش کی جارہی ہے'۔

Loading...