mulayam singh yadav says i will never forget the favor of bsp chief mayawati in mainpuri ns– News18 Urdu

مین پوری میں ملائم سنگھ نے کہا - میں مایاوتی کا احسان کبھی نہیں بھولوں گا

ملائم سنگھ یادو نے کہا کہ آج آپ کے درمیان مایاوتی آئی ہیں، میں ان کا بہت احترام کرتا ہوں، مایاوتی جی کا احسان ہے کہ وہ ہمارے درمیان آئی ہیں۔

Apr 19, 2019 03:40 PM IST | Updated on: Apr 19, 2019 03:41 PM IST

لوک سبھا الیکشن 2019 دوسرے مرحلے کی ووٹنگ ختم ہونے کے بعد سیاسی جماعتوں نے تیسرے مرحلے کی تشہیرمیں اپنی طاقت جھونک دی ہے۔ جمعہ کو مین پوری میں 24 سال بعد ملائم سنگھ یادو اوربی ایس پی سربراہ مایاوتی ایک اسٹیج پرنظرآئے۔ اس دوران ملائم سنگھ نے کہا ’آج آپ کے درمیان مایاوتی جی آئی ہیں، میں ان کا بہت احترام کرتا ہوں۔ مایاوتی جی کا احسان ہے کہ وہ آج ہمارے درمیان آئی ہیں‘۔

مین پوری میں ریلی کو خطاب کرتے ہوئے ملائم سنگھ یادو نے کہا کہ بہت دنوں کے بعد ہم اورمایاوتی جی ایک اسٹیج پرایک ساتھ آئے ہیں۔ یہ بہت خوشی کی بات ہے۔ مایاوتی جی نے ہماری کئی بارمدد کی ہے۔ مجھے جتانے کے ساتھ ہی اتحاد کے تمام امیدوارکو جتوائیں۔

مین پوری میں ملائم سنگھ نے کہا - میں مایاوتی کا احسان کبھی نہیں بھولوں گا

مین پوری میں ملائم سنگھ یادو اورمایاوتی اسٹیج پرایک ساتھ۔

ملائم سنگھ نے مایاوتی کی طرف دیکھ کرکہا ’ہمیں ایک اسٹیج پررہنا ہوگا۔ مین پوری سے ہم بہت بارمنتخب ہوکرپارلیمنٹ گئے ہیں۔ یہ ہمارا گھرہے، اب آخری بارآپ کے کہنے سے میں پھر لڑرہا ہوں۔ میں زیادہ آج تقریر نہیں کروں گا۔ اس بارمجھے پہلے سے زیادہ ووٹ دے کرجتانا‘۔

وہیں مین پوری میں مشترکہ ریلی کو خطاب کرتے ہوئے مایاوتی نے کہا ’یہاں پرامنڈی بھیڑ سے صاف ہے کہ آپ لوگ سماجوادی پارٹی کے سرپرست ملائم سنگھ کو بڑی تعداد میں جتا کرپارلیمنٹ بھیجیں گے۔ بی ایس پی سربراہ نے کہا ’دو جن 1995 کو ہوئے گیسٹ ہاوس سانحہ کے بعد بھی لوک سبھا الیکشن میں اتحاد کا جواب سبھی چاہتے ہوں گے۔ گیسٹ ہاوس سانحہ کے بعد بھی ایس پی - بی ایس پی اتحاد ہوا۔ کبھی کبھی ملک کے مفاد میں ایسے فیصلے لینے پڑتے ہیں، ہم فرقہ وارانہ طاقتوں کوروکنے کے لئے ایک ساتھ آئے ہیں۔

مایاوتی نے کہا کہ ’عمرکے تقاضے کودھیان میں رکھ کرملائم جی نے فیصلہ کیا ہے کہ جب تک آخری سانس ہے، وہ مین پوری کی خدمت کرتے رہیں گے۔ یہ مین پوری کے سچے خدمتگارہیں۔ نریندرموچی کی طرح نقلی سیوک نہیں ہیں۔ آپ لوگ ملائم سنگھ کو جتاکرپارلیمنٹ بھیجئے۔ مایاوتی نے اپنی تقریرکے آخرمیں کہا ’جے بھیم، جے لوہیا، جے بھارت‘۔

Loading...