یوپی اور ممبئی کے بعد اب بہار سے آئی ایس آئی سے تعلق کے الزام میں ابی احمد گرفتار– News18 Urdu

یوپی اور ممبئی کے بعد اب بہار سے آئی ایس آئی سے تعلق کے الزام میں ابی احمد گرفتار

پولیس ذرائع کے مطابق خفیہ اطلاع پر ابی کی گرفتاری بیتیا اور موتیہاری پولیس کے مشترکہ آپریشن میں ہند-نیپال کی سکٹا سرحد سے ہوئی ہے

May 04, 2017 11:28 PM IST | Updated on: May 04, 2017 11:28 PM IST

بیتیا: اترپردیش اور ممبئی میں گزشتہ 24 گھنٹوں میں یوپی اے ٹی ایس کے ذریعہ گرفتار کئے گئے تین نوجوانوں کے بعد اب ہند نیپال سرحد سے ملحق بہار کے مغربی چمپارن ضلع کی سکٹا سرحد سے آئی ایس آئی سے تعلق رکھنے کے الزام میں ابی احمد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق خفیہ اطلاع پر ابی کی گرفتاری بیتیا اور موتیہاری پولیس کے مشترکہ آپریشن میں ہند-نیپال کی سکٹا سرحد سے ہوئی ہے۔

گرفتاری کی اطلاع پر پہنچی این آئی اے پٹنہ کی ٹیم نے ابی احمد سے یہاں ایک نامعلوم مقام پر گھنٹوں پوچھ گچھ کی۔ تفتیشی ایجنسیوں کے دعوی کے مطابق ابی احمد کا پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی سے رابطہ کا بھی انکشاف ہوا ہے۔ ابی آئی ایس آئی کے ذریعہ پاکستان سے آئے جعلی نوٹوں کی کھیپ ہندستان پہنچاتا تھا۔ پوچھ گچھ کے بعد ابی احمد کو چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ جے رام پرساد کی عدالت میں پیش کیا گیا ، جہاں سے این آئی اے کی ٹیم اسے ٹرانزٹ ریمانڈ پر پٹنہ لے کر روانہ ہو گئی ہے۔

یوپی اور ممبئی کے بعد اب بہار سے آئی ایس آئی سے تعلق کے الزام میں ابی احمد گرفتار

اس دوران پولیس اہلکار ونے کمار نے بتایا کہ گرفتار ابی احمد نیپال کے بارا ضلع کے تھانہ سمرون گڑھ ہریہرپور کا رہنے والا ہے۔ اسے جعلی نوٹوں کے بین الاقوامی اسمگلر کے طور پر جانا جاتا ہے۔ وہ این آئی اے کی انتہائی مطلوب افراد کی فہرست میں شامل تھا۔ سال 2014 میں دہلی میں اندرا گاندھی بین الاقوامی ہوائی اڈے پر برآمد تقریبا 50 لاکھ روپے کے جعلی نوٹوں کے معاملہ میں ابی احمد کا نام آیا تھا۔

وہیں پٹنہ میں بھی اس کے خلاف مقدمہ درج ہے ، جس میں اس کے خلاف وارنٹ جاری ہوا تھا۔ این آئی اے کی جانب سے ابی احمد پر 50 ہزار روپے کا انعام بھی رکھا گیا تھا۔ مسٹر کمار کے مطابق ابی احمد سے پوچھ گچھ میں اس کے آئی ایس آئی سے منسلک ہونے کی بھی بات سامنے آ رہی ہے۔