نہیں سدھررہا پاکستان، کشمیرکے نوجوانوں میں تقسیم کررہا ہے فرضی ڈگری– News18 Urdu

نہیں سدھررہا پاکستان، کشمیرکے نوجوانوں میں تقسیم کررہا ہے فرضی ڈگری

یوجی سی نے جموں وکشمیرمیں رہنے والے نوجوانوں کے لئے ایک ایڈوائزری جاری کی ہے۔ یوجی سی کے مطابق پاکستان مقبوضہ کشمیرمیں چل رہی یونیورسٹیوں اورایجوکیشن بورڈ میں پڑھائی کا آفردے رہا ہے۔

May 14, 2019 01:17 PM IST | Updated on: May 14, 2019 01:17 PM IST

جموں وکشمیرکےنوجوانوں کےہاتھ میں ہتھیاراورپتھرتھمانے والا پاکستان اب نئی چال پر اتر آیا ہے۔ پاکستان نےاب جموں وکشمیرکےنوجوانوں کے ہاتھوں میں فرضی ڈگری اورڈپلوما دینےکی نئی چال چلنی شروع کی ہے۔ پاکستان جموں وکشمیرکےنوجوانوں کو وہاٹس اپ اور فیس بک کےذریعہ ڈگری اورڈپلوما کی پڑھائی کا آفردے رہا ہے۔ اس سے متعلق یوجی سی نے جموں وکشمیرمیں رہنے والےنوجوانوں کےلئے ایک ایڈوائزری بھی جاری کی ہے۔

یوجی سی نے جموں وکشمیرمیں رہنے والے نوجوانوں کےلئے ایک ایڈوائزری جاری کی ہے۔ یوجی سی کےمطابق پاکستان مقبوضہ کشمیرمیں چل رہی یونیورسٹیوں اورایجوکیشن بورڈ میں پڑھائی کا آفردے رہا ہے۔ وہیں یوجی سی نے ایڈوائزری جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ نوجوان پی اوکے کے کالج اوریونیورسٹی میں داخلہ نہ لیں۔ کیونکہ یہ یونیورسٹی گرانٹ کمیشن، اکھل بھارتیہ تکنیکی تعلیمی کونسل اورمیڈیکل کونسل آف انڈیا سے منظورشدہ نہیں ہیں۔

نہیں سدھررہا پاکستان، کشمیرکے نوجوانوں میں تقسیم کررہا ہے فرضی ڈگری

علامتی تصویر

Loading...

یوجی سی نے یہ بھی بتایا ہےکہ طلبا اورسرپرست انجانے میں ایسے تعلیمی اداروں میں داخلہ لے رہے ہیں۔ پاکستان مقبوضہ جموں وکشمیرکے یونیورسٹی اوراعلیٰ تعلیمی ادارے ہندوستانی حکومت کے ذریعہ قائم کئے گئے ہیں اورنہ ہی ہندوستانی تعلیمی بورڈ یا اداروں سے منظورشدہ ہیں۔ گلگٹ بالٹستان جیسے اداروں کی ڈگری ڈپلوما بھی ہندوستان میں منظورشدہ نہیں ہیں۔ ان کی ڈگری، ڈپلوما وغیرہ کومنظوری نہیں ملے گی۔ کیونکہ ہندوستان میں ایسے ادارے غیرقانونی ہیں۔

Loading...