رام پور تراہا سانحہ کو انجام دینے والوں کی گود میں بیٹھی ہے کانگریس: نریندر مودی– News18 Urdu

رام پور تراہا سانحہ کو انجام دینے والوں کی گود میں بیٹھی ہے کانگریس: نریندر مودی

نئی دہلی۔ اتراکھنڈ اسمبلی انتخابات کو لے کر تشہیر پر نکلے وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کو سرینگر ریلی میں رام پور تراہا سانحہ کے بہانے کانگریس پر شدید حملہ بولا۔

Feb 12, 2017 02:54 PM IST | Updated on: Feb 12, 2017 02:56 PM IST

نئی دہلی۔ اتراکھنڈ اسمبلی انتخابات کو لے کر تشہیر پر نکلے وزیر اعظم نریندر مودی نے اتوار کو سرینگر ریلی میں رام پور تراہا سانحہ کے بہانے کانگریس پر شدید حملہ بولا۔ پی ایم مودی نے کہا کہ اتراکھنڈ بننے کے دوران ایس پی نے رامپور تراہا سانحہ کو انجام دیا اور عورتوں کی توہین کی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس آج رام پور تراہا سانحہ کو انجام دینے والوں کی گود میں بیٹھی ہے۔

سرینگر میں پی ایم مودی نے گڑھوالی میں خطاب کرتے ہوئے ریلی میں آئے لوگوں کا خیر مقدم کیا۔ مودی کافی جارح نظر آئے۔ اتراکھنڈ تحریک کے دوران 1 اکتوبر 1994 کی رات ہوئے مظفر نگر میں رام پور تراہا سانحہ کو انتخابی ایشو بنایا۔ اس وقت یوپی میں ملائم سنگھ یادو کی حکومت تھی۔

رام پور تراہا سانحہ کو انجام دینے والوں کی گود میں بیٹھی ہے کانگریس: نریندر مودی

Loading...

پی ایم مودی نے کہا کہ رام پور تراها سانحہ کے دوران خواتین کی توہین کرنے والوں کی گود میں بیٹھی ہے کانگریس۔ وزیر اعظم نے اس بہانے کانگریس پر کرارا حملہ کرتے ہوئے کہا کہ سماج وادی پارٹی اور کانگریس میں اندرون خانہ ملی بھگت چل رہی ہے۔ مودی نے یوپی میں سماج وادی پارٹی۔ کانگریس اتحاد کے بہانے اتراکھنڈ میں کانگریس اور سی ایم ہریش راوت پر جم کر حملہ کیا۔ وزیر اعظم نے کہا کہ اتراکھنڈ کا الیکشن تیز رفتار سے آگے بڑھ رہا ہے۔ ٹھیک ایک ماہ بعد اتراکھنڈ میں موجود کانگریس حکومت سابق ہو جائے گی۔

اٹل بہاری واجپئی کا نام لیتے ہوئے مودی نے کہا کہ جس خواب کے ساتھ انہوں نے ریاست بنائی، اسے پورا نہیں ہونے دیا گیا۔ انہوں نے اتراکھنڈ کا موازنہ جھارکھنڈ اور چھتیس گڑھ سے کرتے ہوئے کہا کہ دیو بھومی ان سے کافی پسماندہ ہے۔ کانگریس حکومت کی وجہ سے پسماندہ ہے۔

کیا ہے رام پور تراها سانحہ؟

دراصل، رام پور تراها گولی سانحہ کو پولیس کی جانب سے اتراکھنڈ ریاست تحریک کے لئے مظاہرہ کر رہے مظاہرین پر اتر پردیش کے رام پور کراسنگ، مظفرنگر ضلع میں کی گئی فائرنگ کے واقعہ کو کہتے ہیں۔ اس وقت اتراکھنڈ یوپی کا حصہ تھا اور ملائم سنگھ یادو وزیر اعلی تھے۔

Loading...