پنجاب میں دہشت گردی پھیلانے کی کوشش میں مصروف ہے پاکستان: ذرائع کا دعویٰ

خفیہ ذرائع بتاتے ہیں کہ ایک بارپھرپاکستان پنجاب میں دہشت گردی کا دوسرا محاذ کھولنے میں پوری طاقت جھونک رہا ہے۔ 

Oct 05, 2018 04:05 PM IST | Updated on: Oct 05, 2018 04:10 PM IST
پنجاب میں دہشت گردی پھیلانے کی کوشش میں مصروف ہے پاکستان: ذرائع کا دعویٰ

علامتی تصویر۔

کشمیرمیں فوج اورپولیس کے سخت تیوروں نے دہشت گردوں کو مشکل میں ڈال تو دیا ہے، لیکن پاکستان اس بات کو نہیں مانتا۔ خفیہ ذرائع بتاتے ہیں کہ ایک بارپھرپاکستان پنجاب میں دہشت گردی کا دوسرا محاذ کھولنے میں پوری طاقت جھونک رہا ہے۔ ٹریننگ سے لے کردنیا کے دوسرے ممالک میں خالصتان حامیوں کو طاقت دینے سے پاکستان پیچھے نہیں ہٹ رہا ہے، خاص طورپرپنجاب میں۔

عالم یہ ہے کہ گزشتہ ایک سال میں خالصتان کو لے کرپنجاب سے دنیا کے کچھ ممالک میں خالصتان کے حامی کھل کرسامنے آنے لگے ہیں۔ پنجاب میں بھی جو دہشت گرد ٹھنڈے پڑے تھے، وہ بھی اب سرگرم ہونے لگےہیں۔  دراصل یہ آگ تب بھڑکی جب گزشتہ سال گروگرنتھ صاحب کی توہین ہوئی۔ اس سے پورا سکھ طبقہ ناراض تھا۔

Loading...

الزام اورجوابی الزام کے دورچلے، جم کرسیاست بھی ہوئی، لیکن ناراضگی ختم نہیں ہوئی۔ وزیراعلیٰ امریندرسنگھ کی حکومت نے گروگرنتھ صاحب کی توہین پرسخت سزا کی تجویز والے قانون بھی بنادیئے۔ تاہم اسی غصے نے دہائیوں سے خاموش پڑے ریاست میں جیسے چنگاری ڈال دی ہے۔

یہ بھی پڑھیں:    ہندوستان نے پاکستان کے الزامات کا دیا زبردست جواب، بے بنیاد الزام نہ لگائے پاکستان

اسی ناراضگی کا فائدہ اٹھانے کی کوشش پاکستان نے کی ہے۔ فی الحال حالات قابو میں ہیں، لیکن خفیہ ایجنسیوں کا دعویٰ ہے کہ پاکستان  پنجاب میں دہشت گردی کا دوسرا محاذ کھولنے کےلئےایڑی چوٹی کا زورلگارہا ہے۔

پنجاب میں دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ریاستی پولیس اورریاست کا خفیہ محکمہ ایک اہم ذمہ داری نبھارہا ہے۔ پنجاب کے خفیہ ذرائع کی مانیں توگزشتہ ایک سال میں 50 سے زیادہ دہشت گرد گرفتار کئے گئے ہیں، جن پرپہلے سے ہی گہری نظربنی ہوئی تھی۔ جیسے ہی وہ سرگرم ہوئے انہیں پکڑ لیا گیا۔

یہ بھی پڑھیں:   'اقوام متحدہ میں سشما سوراج نے کھولی پاک کی پول ،'دہشت گردی پر نہ چہرے پر جھینپ، نہ ماتھے پرشکن

نظران خالصتانی حامیوں پربھی ہے، جو فی الحال سرگرم نہیں ہیں، لیکن اگروہ باہرنکلتے ہیں توانہیں بھی فوراً گرفتارکرلیاجائے گا۔ پنجاب کی ایجنسیاں وزارت داخلہ سے مسلسل رابطہ بنائے ہوئے ہیں اورپاکستان کے ذریعہ دوسرا محاذ کھولنے کی مہم کو جڑسے اکھاڑنے میں مصروف ہیں۔

یہ بھی پڑھیں:   کسی بھی ملک کو دہشت گردی کی حمایت کرنے کی اجازت نہیں دی جانی چاہئے: سشما سوراج

بیرون ممالک میں بھی خالصتان کے بہی خواہوں کے خلاف کارروائی کی جارہی ہے۔ ہندوستانی حکومت اپنے تمام دوست ممالک میں خالصتان حامیوں کی مہم پرٹھنڈا پانی ڈالنے کی پوری تیاری میں رہتی ہے۔ اگرایسے لوگ دوسرے ممالک میں بھی احتجاج کرتے ہیں تو وہاں کی حکومتیں گرفتارکرنے اورانہیں الگ کرنے میں پیچھے نہیں رہتیں۔

امیتابھ شریواستو کی رپورٹ

یہ بھی پڑھیں:   پاکستان پربولے فوجی سربراہ، "دہشت گردی اور بات چیت ایک ساتھ ممکن نہیں"۔

Loading...