آئی ایس آئی سے تعلق کے الزام میں ایک اور گرفتاری ، پاکستانی ہائی کمیشن کے مہربان علی کا بھی نام آیا سامنے

فیض آباد سے آفتاب علی اور ممبئی سے الطاف کی گرفتاری کے بعد جمعرات کو یوپی اے ٹی ایس اور ممبئی اے ٹی ایس نے ایک اور شخص کو گرفتار کیا ہے

May 04, 2017 08:08 PM IST | Updated on: May 04, 2017 08:08 PM IST

لکھنو : پاکستان کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی سے تعلق کے الزام میں اتر پردیش میں فیض آباد سے آفتاب علی اور ممبئی سے الطاف کی گرفتاری کے بعد جمعرات کو یوپی اے ٹی ایس اور ممبئی اے ٹی ایس نے ایک اور شخص کو گرفتار کیا ہے ۔ گرفتار شدہ نوجوان کا نام جاوید بتایا جارہا ہے۔ اس طرح گزشتہ چوبیس گھنٹے میں یوپی اے ٹی ایس اور ممبئی اے ٹی ایس اب تک تین افراد کو گرفتار کرچکی ہے۔

بدھ کو آفتاب کی گرفتاری کے چند گھنٹے بعد یوپی اے ٹی ایس نے الطاف قریشی کو ممبئی سے گرفتار کیا تھا۔ آج جمعرات کو یوپی اے ٹی ایس نے مہاراشٹر اے ٹی ایس کے ساتھ مل کر جاوید کو گرفتار کیا ۔ جاوید کو اے ٹی ایس نے ممبئی کی یوسف منزل سے جمعرات کی صبح گرفتار کیا ۔

آئی ایس آئی سے تعلق کے الزام میں ایک اور گرفتاری ، پاکستانی ہائی کمیشن کے مہربان علی کا بھی نام آیا سامنے

اتر پردیش اے ٹی ایس کے آئی جی اسیم ارون کے مطابق جاوید کو ہی پاکستان سے پیسہ جمع کرنے کی ہدایت ملتی تھی ، اس کے کہنے پر الطاف نے اکاؤنٹ میں پیسے جمع کرائے تھےاور پیسوں کی عوض میں آفتاب فوج سے وابستہ معلومات پاکستان کو بھیجتا تھا۔انہوں نے بتایا کہ جاوید سے مہاراشٹر اے ٹی ایس کے ساتھ مل کر پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ اس سلسلہ میں مزید گرفتاریاں عمل میں آنے کا امکان ہے۔

ادھر اتر پردیش کے ایڈیشنل پولیس ڈائریکٹر جنرل آدتیہ مشرا نے دعوی کیا ہے کہ ان لوگوں کے پاکستانی ہائی کمیشن کے ایک افسر مہربان علی سے بھی رابطہ تھا۔ یہ انہی کے ذریعے آپریٹ کر رہے تھے۔

Loading...

Loading...