اجودھیا میں دہشت گردانہ حملے کا خدشہ، سکیورٹی ایجنسیاں الرٹ

دراصل اجودھیا دہشت گردانہ حملے کے سازش رچنے والوں کو 18 جون کو الہ آباد میں سزا سنائی جانی ہے۔ کورٹ کے فیصلے کو لیکر بھی اجودھیا میں ہائی الرٹ ہے۔۔۔

Jun 14, 2019 03:11 PM IST | Updated on: Jun 14, 2019 03:43 PM IST
اجودھیا میں دہشت گردانہ حملے کا خدشہ، سکیورٹی ایجنسیاں الرٹ

یوپی کےاجودھیا میں دہشت گردانہ حملے کا ان پٹ سکیورٹی ایجنسیوں کو ملاہے۔ اسے لیکر اجودھیا میں ہائی الرٹ ہے۔ انٹیلیجینس ایجنسیوں کو اطلاع ملی ہے کہ نیپال کے راستے ہندستان میں گھسے دہشت گرد اجودھیا کو نشانہ بنا سکتے ہیں۔ یہاں آنے۔جانے والے لوگوں کی تلاشی لی جارہی ہے۔ پولیس کی ہوٹلوں اور دھرم شالاؤں پر خاص نظر ہے۔ دراصل اجودھیا دہشت گردانہ حملے کے سازش رچنے والوں کو 18 جون کو الہ آباد میں سزا سنائی جانی ہے۔ کورٹ کے فیصلے کو لیکر بھی اجودھیا میں ہائی الرٹ ہے۔۔۔

بتادیں کہ 2005 میں ہواتھا دہشت گردانہ حملہ۔ 5 جون 2005 کو متنازعہ احاطے میں فدائین حملہ ہواتھا۔ اس حملے کو سکیورٹی فورسز نے ناکام کردیا تھا۔ لشکر طیبہ کے اس حملے کو ناکام کرتے ہوئے سکیورٹی اہکلکاروں نے 5 دہشت گردوں کو موت کی نیند سلا دیا تھا۔ اس حملے کی مخالفت میں بی جے پی نے ملک بھر میں مظاہرے کئے تھے۔ حملے سے تار جڑنے کی وجہ 4 کشمیری لوگوں کو گرفتار کیا گیا تھا۔۔۔

Loading...

کئی وی آئی پی پروگرام۔۔۔ مسلسل تین دنوں تک اجودھیا میں وی آئی پی پروگرام ہونے ہیں۔ 14 جون کو ریاست کے نائب وزیر اعلی ڈاکٹر دنیش شرما، 15 جون کو ڈپٹی سی ایم کیشو موریہ اور 16 جون شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے بھی اجودھیا میں ہوں گے۔ غور طلب ہے کہ گزرے 6 جون کو شیو سینا کے ترجمان سنجے راوت نے ٹویٹ کیا تھا کہ بی جے پی  کے پاس 303 ارکان پارلیمنٹ ہیں اور شیو سینا کے پاس 18، اب کس چیز کی ضرورت ہے۔ وہیں بی جےپی لیڈر سبرامنیم سوامی نے بھی رام مندر کو لیکر سوال کئے ہیں۔

Loading...